اسلامی ملک کا وہ گاﺅں جہاں ہزاروں لڑکیاں انٹرنیٹ پر دنیا کے لاکھوں مردوں کو بے وقوف بنا کر ان سے پیسے سمیٹتی ہیں، یہ شرمناک کاروبار کس ملک سے چلا یاجارہا ہے؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

اسلامی ملک کا وہ گاﺅں جہاں ہزاروں لڑکیاں انٹرنیٹ پر دنیا کے لاکھوں مردوں کو ...
اسلامی ملک کا وہ گاﺅں جہاں ہزاروں لڑکیاں انٹرنیٹ پر دنیا کے لاکھوں مردوں کو بے وقوف بنا کر ان سے پیسے سمیٹتی ہیں، یہ شرمناک کاروبار کس ملک سے چلا یاجارہا ہے؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

  

رباط(مانیٹرنگ ڈیسک) انٹرنیٹ پر لوگوں کو ورغلا کر فحش حرکات کروانا اور ان کی ویڈیو بنا کر انہیں بلیک میل کرنا اگرچہ دنیا بھر میں عام ہے لیکن مراکش کا ایک گاﺅں ایسا ہے جس کی لڑکیاں اتنی بڑی تعداد میں یہ کام کر رہی ہیں کہ اس شہر کو ”جنسی بلیک میلنگ کا عالمی دارالحکومت‘کا خطاب دے دیا گیا ہے۔میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق اس گاﺅں کا نام اوید زیم(Oued Zem)ہے جو مراکش کے وسط میں واقع ہے۔ یہاں 3ہزار سے زائد لڑکیاں ایسی ہیں جو انٹرنیٹ کے ذریعے مردوں کو پھنساتی ہیں اور ویب کیم پر انہیں جنسی حرکات کرنے پر اکساتی ہیں جہاں سے وہ ان کی ویڈیو بنا کر بعد ازاں انہیں بلیک میل کرکے رقوم وصول کرتی ہیں۔

معروف ترین فحش اداکارہ نے مسلمانوں کے خلاف اعلان جنگ کر دیا کیونکہ۔۔۔

رپورٹ کے مطابق اوید زیم کی ان نوسرباز لڑکیوں کا سب سے بڑا شکار برطانوی مرد بن رہے ہیں۔ یہ لڑکیاں مردوں کی قابل اعتراض ویڈیو بنا کر انہیں دھمکی دیتی ہیں کہ اگر انہوں نے رقم نہیں دی تو وہ ویڈیو سوشل میڈیا کے ذریعے ان کے خاندان اور دوستوں تک پہنچا دیں گی۔وہ ویڈیو ختم کرنے کے عوض مردوں سے 800پاﺅنڈ (تقریباً 1لاکھ روپے) تک رقم وصول کرتی ہیں لیکن اکثر اوقات رقم لینے کے باوجود ویڈیو ڈیلیٹ نہیں کرتیں۔ اوید زیم میں یہ کام باقاعدہ انڈسٹری کی شکل اختیار کر چکا ہے جہاں گزشتہ دنوں حکومت نے ان لڑکیوں کے خلاف ایک کریک ڈاﺅن بھی کیا ہے جس میں سب سے زیادہ گرفتاریاں اوید زیم سے ہوئی ہیں جن میں بہت سے لڑکے بھی پکڑے گئے ہیں جو لڑکیوں کے نام سے جعلی اکاﺅنٹس بنا کر یہ نوسربازی کر رہے تھے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -