حکومت کو جج محمد بشیر کی مدت ملازمت میں 10 مارچ سے قبل توسیع کی ہدایت

حکومت کو جج محمد بشیر کی مدت ملازمت میں 10 مارچ سے قبل توسیع کی ہدایت

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) سیکرٹری قانون نے سپریم کورٹ کو شریف خاندان کیخلاف نیب ریفرنسز کی سماعت کرنیوالے احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کی مدت ملازمت میں توسیع کی یقین دہانی کرادی۔سپریم کورٹ نے جج محمد بشیر کی مدت ملازمت میں توسیع نہ کرنے کا نوٹس لیا تھا اورگزشتہ روزسیکرٹری قانون کو طلب کرتے ہوئے جواب مانگا تھا۔عدالت کے روبرو پیش ہو کو سیکرٹری قانون نے یقین دہانی کرائی کہ چند روز میں جج محمد بشیر کی مدت ملازمت میں توسیع ہوجائے گی، چیف جسٹس نے استفسار کیا وزارت قانون کو کب خط ملا، سیکرٹری قانون نے بتایااسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس کی جانب سے 26 فروری کو جج محمد بشیر کی توسیع کی سمری موصول ہوئی جسے وزیراعظم سیکرٹریٹ بھیج دیا گیا ہے جو 12 مارچ سے قبل منظور ہوجائے گی،چیف جسٹس نے استفسار کرتے ہوئے کہا اتنے دنوں سے آپ کیا کر رہے تھے، میں جب سیکرٹری تھا تو اہم فائلیں خود لے جاتا تھا، کل کابینہ کی میٹنگ بھی تھی، سیکرٹری قانون نے کہا کابینہ میں یہ معاملہ نہیں جانا تھا،جس پر چیف جسٹس نے کہا سمری سے متعلق 10 مارچ کو بینچ لاہور میں ہوں گا آپ ہمیں وہاں بتائیں گے کہ توسیع کردی ہے اور اگر سمری منظور کرلی گئی ہے تو 10 مارچ تک نوٹیفیکیشن جاری کریں۔سپریم کورٹ نے سیکریٹری قانون کی جانب سے عدالت کو 10روز میں جج کی مدت ملازمت میں توسیع کی یقین دہانی کے بعد کیس کی سماعت 10مارچ تک ملتوی کردی ۔یاد رہے شریف خاندان کیخلاف نیب ریفرنسز کے ٹرائل کا آغاز 14 ستمبر 2017 کو ہوا۔ سپریم کورٹ کی طرف سے چھ ماہ میں ٹرائل مکمل کرنے کی ڈیڈ لائن 13 مارچ کو ختم ہو رہی ہے۔نواز شریف، مریم ، حسن، حسین نواز، کیپٹن (ر) صفدر اور اسحاق ڈار تمام ملزمان کیخلاف درج نیب مقدمات کی سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کر رہے ہیں، ان کی مدت ملازمت بھی 13 مارچ کو پوری ہورہی ہے۔

توسیع ہدایت

مزید : صفحہ اول