میک کمپنی کو دوبارہ کوھاٹ میں تعمیراتی کاموں کی نگرانی کے لیے ٹھیکہ دینے کی بازگشت

میک کمپنی کو دوبارہ کوھاٹ میں تعمیراتی کاموں کی نگرانی کے لیے ٹھیکہ دینے کی ...

کوہاٹ(بیورورپورٹ) میک کمپنی کو دوبارہ کوھاٹ میں تعمیراتی کاموں کی نگرانی کے لیے ٹھیکہ دینے کی باز گشت سابقہ ٹی ایم او کوھاٹ کا ہری پور جاتے جاتے میک کمپنی کے ساتھ مک مکا کرنے کا انکشاف‘ تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کی صوبائی حکومت کے قیام کے بعد کوھاٹ اور لاچی تحصیل میں کاموں کی نگرانی کے لیے کروڑوں روپے دے کر میک کمپنی کو کنسلٹنسی کے لیے کہا گیا جنہوں نے کروڑوں روپے تو وصول کر کے اپنی کمپنی کی حالت بہتر بنائی مگر بدقسمتی سے کوھاٹ اور لاچی کے تعمیراتی کاموں کا بیڑہ غرق کر کے رکھ دیا مذکورہ کمپنی کی غیر ذمہ داری کی یہ حالت تھی کہ کمپنی کا کوھاٹ اور لاچی میں اپنا آفس تک نہ تھا اور کنٹریکٹرز کو اپنے بلوں کے لیے پشاور یونیورسٹی ٹاؤن کے دھکے کھانے پڑتے اس کمپنی کی نگرانی میں کئی تعمیراتی منصوبے تاحال بھی مکمل نہ ہو سکے اس کے باوجود اس کمپنی کو دوبارہ مبینہ طور پر کنسلٹنسی کے لیے مقرر کرنا کوھاٹ کے ساتھ زیادتی کے علاوہ کچھ نہیں اس حوالے سے جب سابقہ ٹی ایم او کوھاٹ محمد شعیب سے ٹیلیفون پر بات کی گئی تو انہوں نے میک کمپنی کو نگرانی کے لیے مقرر کرنے کی تردید کی مگر ذرائع کے مطابق کوھاٹ سے جلد شروع ہونے والے تین بڑے منصوبوں کی دیکھ بھال کے لیے نااہل میک کمپنی کو مسلط کر دیا گیا ہے عوامی حلقوں اور کنٹریکٹرز کے مطابق اگر یہ بات سچ ثابت ہوئی تو یہ سابقہ ٹی ایم او کا کوھاٹ کے ساتھ ظلم عظیم ہو گا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر