بخشالی میں فروغ تعلیم ووچر سکیم مسلسل سست روی کا شکار

بخشالی میں فروغ تعلیم ووچر سکیم مسلسل سست روی کا شکار

بخشالی ( نمائندہ پاکستان)پی ٹی آئی حکومت کا شروع کردہ اقراء فروغ تعلیم ووچر سکیم مسلسل سست روی کا شکارگذ شتہ ایک سال سے پرائیویٹ سکولوں کو فنڈنگ بند پرائیویٹ سکول مالکان مزید ووچر سکیم کے تحت داخل شدہ بچوں کا بوجھ اٹھانے سے عاجزتفصیلات کے مطابق وہ والدین جو اپنے بچوں کو غربت کی وجہ سے سکول میں داخل نہیں کرا سکتے اور انکے اخراجات نہیں اٹھا سکتے وہ اس سکیم کے تحت سرکاری خرچہ پر اپنے بچوں کو پرائیویٹ سکولوں میں داخل کر کے انہیں تعلیم کے زیور سے آراستہ کرا سکتے ہیں اس سکیم کے تحت پچھلے سال کی طرح امسال بھی مارچ 2018کو گھر گھر سروے کیا گیا اور بچوں کو ووچر جاری کئے گئے اور والدین نے خوشی خوشی اپنے بچوں کو پرائیویٹ سکولوں میں داخل کیا لیکن بدقسمتی سے ان والدین کو لینے کے دینے پڑ ے یکم اپریل سے لے کر تاحال بچوں کو خود کتابیں یونیفارم خود لینے پڑے یا سکول نے مہیا کئے ایک سال سے ذیادہ کا عرصہ گزرنے کے باوجود ان سکولوں کو فنڈز جاری نہیں کئے گئے فنڈ کے سلسلے میں دفتر کے کئی چکر کاٹنے کے باوجود ہر دفعہ نئے ہیلے بھانوں سے واپس بھیج دیے جاتے ہیں اب ان پرائیویٹ سکول مالکان کا کہنا ہے کہ ہم مزید ان بچوں کا بوجھ اٹھانے سے عاجز آچکے ہیں لہٰذا متعلقہ ڈیپارٹمنٹ ایک ماہ کے اندر اندر ہمارے بقایا جات ادا کرے کیونکہ یہ ادارے مزیدان بچوں کے اخراجات نہیں اٹھا سکتے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر