سکائی لائن ہنڈی میں کثیر المنزلہ پلازہ 2 کنال پانچ مرلے کی اراضی پر مشتمل ہے ،محمد عاصم خان

سکائی لائن ہنڈی میں کثیر المنزلہ پلازہ 2 کنال پانچ مرلے کی اراضی پر مشتمل ہے ...

پشاور (سٹی رپورٹر ) ضلع ناظم پشاورمحمدعاصم خان نے پارکنگ سکائی لائن نمک منڈی پشاورمیں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کا پہلا کثیر المنزلہ پلازہ2 کنال پانچ مرلے کی اراضی پر مشتمل ہے یہ صوبے کا اپنی نوعیت کا پہلا منفرد منصوبہ ہے جس سے ٹریفک مسائل حل اور کارپارکنگ کی سہولت شہریوں اورتاجروں کو مل جائیگی پارکنگ سکائی لائن منصوبے کا تخمینہ 350 ملین روپے ہیں او ر اس منصوبے سے 120 ملین سالانہ آمدنی ضلعی حکومت کو ملیں گی جس کے بیسمنٹ ، سیمی بیسمنٹ ، گراؤنڈ فلور اور فرسٹ فلور پر 119 دکانیں ہوگی جبکہ باقی فلورز پر 198 گاڑیوں کے پارک کرنے کی گنجائش ہو گی انہوں نے کہاکہ دکانیں پہلے سے موجود کرایہ داروں اور الاٹیز کو متبادل کے طور پر فراہم کرینگے ، جبکہ رہ جانے والے دکانیں اوپن آکشن پر نیلام کی جائیگی ، انہوں نے کہاکہ ضلعی حکومت نے دیہی علاقوں کے مکینوں کی معیار زندگی بلند کرنے کیلئے ہسپتالوں اور سکولوں کو شمسی توانائی پر منتقل کرکے بجلی کے لوڈ شیڈنگ سے نجات دلائی ، انہوں نے کہاکہ سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ نے کارپارکنگ کے گھمبیر مسئلے کا حل ڈھونڈ نکالا ہے ، پشاور میں ٹریفک کے سنگین مسا ئل پیدا ہوئے ماضی میں پلازوں میں پارکنگ کے لیے کوئی پالیسی وضع نہیں کی گئی اور نہ ہی اس کے لیے کوئی قانون سازی کی گئی اور پلازوں میں پارکنگ کے لیے کوئی بندوبست نہ ہونے کے وجہ سے سڑکوں پر پارکنگ کی روایت نے جنم لیا جس کی وجہ ٹریفک کے نہ ختم ہونے والے مسائل شروع ہوئے۔ ضلعی حکومت کے قیام کے ساتھ ہی اس مسئلے پر قابو پانے کے لیے سوچ و بچار اور مشاورت کا عمل شروع کیا اور اس گھمبیر مسئلے کا حل صوبے کا پہلے کثیر المنزلہ کار پارکنگ پلازہ کی صورت میں نکالا جو کہ ضلعی حکومت کے پراپرٹی پر تعمیر کیا جا رہا ہے ،اور اس پلازے کے مکمل ہونے کے ساتھ ہی نمک منڈی اور گرد ونوا ح میں سڑک پر کار پارکنگ پر مکمل پابندی لگا دی جائے گی انہوں نے کہاکہ صوبے کے پہلے پارکنگ پلازہ سے تکہ کڑاہی کے لئے مشہور نمک منڈی کے کاروبار کو تقویت مل جائے گی اور آنے والے مہمانوں کو پارکنگ کی فکر سے چھٹکارا مل جائے گا۔ نمک منڈی فوڈ سٹریٹ کی تعمیر سے بھی شہریوں اورتاجروں کو بڑا ریلیف مل جائے گا، میں وزیراعلیٰ خیبرپختونخواکا شکرگزار ہوں کہ جب بھی ضلعی حکومت نے ان کو دعوت دی انہوں نے شارٹ نوٹس پرآکرضلعی حکومت کی حوصلہ افزائی کی ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر