سوتیلے باپ کا قتل کرنیوالے ملزم کو موت کی سزا کا حکم

سوتیلے باپ کا قتل کرنیوالے ملزم کو موت کی سزا کا حکم

کوٹ ادو (تحصیل رپورٹر)ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کوٹ ادو اقتدار علی خان نے 23سالہ سوتیلے بیٹے کے ہاتھوں والد کے قتل کا فیصلہ سنا دیا،قاتل کو سزائے موت ،ایک لاکھ روپے جرمانہ،عدم ادائیگی پر جائداد ضبط،استغاثہ کے مطابق15قبل احسان پور کے رہائشی سیدعارف شاہ نے مطلقہ شمیم مائی سے شادی کی تھی جبکہ شمیم مائی کےء بطن سے سابقہ خاوند سے ایک بیٹا سیدمحمد عاطف تھا ،طلاق کے (بقیہ نمبر19صفحہ12پر )

بعد شمیم مائی بیٹے عاطف کو بھی ساتھ لے آئی تھی جسکی پرورش بھی محمد عارف چشتی کررہا تھا،جوان ہونے پر محمد عاطف چشتی اپنی والدہ کو کہتا رہتا تھا کہ وہ اسے اور اس کے اس خاوند کو قتل کرے گا،11اگست 2013کوسید عاطف اپنے ایک نا معلوم ساتھی کے ہمراہ مسلح پسٹل گھر داخل ہو گیا تھا اور محمد عارف چشتی پر گولیاں چلا دیں تھیں والدہ شمیم مائی کی مداخلت پر والدہ کو بھی فائر مار دیاتھا جسکی زبان پر فائر لگا تھامحمد عارف چشتی زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے موقع پر جاں بحق ہو گیا تھا،جس تھانہ دائرہ دین پناہ میں سیدعاطف اور اس کے ایک نامعلوم ساتھی کے خلاف مقتول عارف چشتی کے بھائی محمد طارق چشتی کی مدعیت میں قتل کا مقدمہ نمبر270/13زیر دفعہ302-34درج ہواتھا،پولیسدائرہ دین پناہ نے تفتیش کے دوران چالان عدالت میں پیش کیا تھا ، دوران سماعت جرم ثابت ہونے پر فاضل عدالت نے قاتل23سالہمحمد عاطف کو سزائے موت کا حکم سناتے ہوئے ایک لاکھ روپے جرمانہ اور عدم ادائیگی پر جایدادضبط کرنے کا حکم سنادیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر