نوشہرہ ،انجمن قانون گویان وپٹواریان کا انٹی کرپشن کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

نوشہرہ ،انجمن قانون گویان وپٹواریان کا انٹی کرپشن کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

نوشہرہ(بیورورپورٹ) انجمن قانون گویان و پٹواریان کا محکمہ انٹی کرپشن کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ شوبرا چوک ہر قسم کی ٹریفک کیلئے بلاک ایک ماہ سے جاری ہڑتال کی وجہ سے زمینوں کی خریدوفروخت کے انتقالات سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا حکومتی خزانے کوماہانہ کروڑوں روپے کا نقصان حکومت فوری طورپر انجمن قانون گویان وپٹواریان کے مطالبات تسلیم کریں مطالبات تسلیم نہ ہونے کی وجہ سے ہڑتال غیرمعینہ مدت تک جاری رہے گا مظاہرین کی قیادت صوبائی صدر عالمگیر خان، آل پاکستان انجمن قانون گویان وپٹواریان کے جنرل سیکرٹری مکمل شاہ، ضلعی صدر کاشف خان، ملک بھر کے صدور اور جنرل سیکرٹریوں نے مظاہرے کی قیادت کی مظاہرین نے حکومت کو 9 مطالبات کی ڈیڈ لائن جن میں ایف آئی آر کی واپسی، ڈائریکٹر انٹی کرپشن،ڈی پی او نوشہرہ ، انٹی انسپکٹر ہدایت شاہ کا ٹرانسفر، آئندہ دوران کاروائی انٹی کرپشن کے افسران کے ساتھ محکمہ مال کے افسر میں سے ایک نمائندہ انٹی کرپشن ٹیم میں شامل ہو ، انٹی کرپشن کو جو ریکارڈ یا انکوائری درکار ہو توڈپٹی کمشنر کے ذریعے فراہم کریں ،ڈائریکٹر انٹی کرپشن کے دفتر سے ایک سال ایف آئی آر کاریکارڈ لیا جائے اور انٹی کرپشن عدالت کے فیصلوں کا موازہ کیاجائے تاکہ واضح ہو سکے کہ کتنے ایف آئی آر بدنیتی پر مبنی ہیں لینڈ ریونیو ایکٹ 1967 سیکشن 182 واضح طورپر کہتا ہے کہ تحصیلدار یا اس کے حکم کے تحت کئے گئے کام پر کوئی کسی قسم کا استعاثہ ایف آئی آر نہیں ہوسکتی بورڈ آف ریونیو اس پر واضح احکامات جاری کریں، 22 جنوری 2019 کے واقعے کے بعد جتنی بھی ایف آئی آر انٹی کرپشن کی جانب سے پٹواریان کے خلاف بدنیتی پر درج ہوچکے ہیں وہ تمام واپس کئے جائیں نیز انکوائریاں جو محکمہ مال کے خلاف بنا رہے ہیں وہ ختم کئے جائیں مظاہرین نے کہا کہ ہم عدلیہ کا احترام کرتے ہیں اور ان سے انصاف کی توقع رکھتے ہیں ہمارے مظاہرے اور احتجاج محکمہ انٹی کرپشن کے خلاف ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر