پاکستان کیساتھ 90گھنٹے کے تصادم میں بھارت کو شکست ہوئی ، سابق انڈین فوجی جنرل کا اعتراف

پاکستان کیساتھ 90گھنٹے کے تصادم میں بھارت کو شکست ہوئی ، سابق انڈین فوجی جنرل ...

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک)معروف بھارتی لیفٹیننٹ جنرل(ر)ایچ ایس پانگ نے کہا ہے پاکستان کیساتھ بھارت کا90گھنٹے کا تصادم اچانک عجیب انداز میں شطرنج کی طرح اختتام پذیر ہوا جو بھارت کی شکست ہے۔تفصیلات کے مطابق ہندوستانی فوج میں 40 سال تک سروسز سرانجام دینے والے ایچ ایس پانگ نے مشہور بھارتی ویب سائٹ ’دی پرنٹ‘ میں شائع ہونیوالے اپنے مضمون میں اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے بھارت کیلئے تشویش کا باعث ہونا چاہیے کیونکہ اس نے جامع قومی سلامتی وفوجی حکمت عملی کے فقدان کے بارے میں سوالا ت کھڑے کردیے ہیں، صرف 90گھنٹوں نے ہی یہ ثابت کردیا کس طرح پاکستان اور بھارت کے درمیان تذویراتی مقابلے کا تصادم مستقبل میں کیسا ہوسکتا ہے؟ اڑی میں ایک حربی آپریشن جو سٹیٹس کو میں تبدیلی کی مودی کی پہلی کوشش تھا تاہم بالاکوٹ واقعے میں کوئی تذو یر اتی نتائج نہیں دیے۔پلوامہ واقعے کے بعد بھارت کا فوری سیاسی مقصد یہ تھا کہ وہ پاکستان میں کہیں بھی دہشتگردی سے متعلقہ اہداف کو نشانہ بنانے کیلئے پیشگی حملہ کرے جس میں اس کا مقصد پاکستان کی پراکسی وار کا جواب دینا بھی تھا جبکہ پاکستان کی سیاسی حکمت عملی اپنی ملکی سالمیت کا تحفظ اور بھارتی مفادات کیلئے اٹھائے گئے اقدامات کا مقابلہ تھا۔مضمون میں کہا گیا 26فروری سے یکم مارچ تک کا 90گھنٹے کا تصادم تعطل میں منتج ہوا جس میں دونوں اطراف سے جزوی سیاسی و عسکری مقاصد حاصل ہوئے۔ پا کستان کیساتھ بھارت کا90گھنٹے کا تصادم اچانک عجیب انداز میں اختتام پذیر ہوا جو بھارت کی شکست ہے اور یہ امر بھارت کیلئے تشویش کا باعث ہونا چاہیے کیونکہ اس نے جامع قومی سلامتی اور فوجی حکمت عملی کے فقدان کے بارے میں سوالات کھڑے کردیے ہیں۔

ایچ ایس پانگ

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک )بھارتی سپریم کورٹ میں اٹارنی جنرل نے گزشتہ روز رافیل طیارے ڈیل کی حساس خفیہ دستا ویزات کے چوری ہو جانے کا انکشاف کیاکیا اس خبر نے پورے بھارت میں تہلکہ مچا دیا۔36رافیل طیاروں کی خریداری میں کرپشن کے کیس کی سماعت کے دوران اٹارنی جنرل نے بھارتی سپریم کورٹ کو بتا یا رافیل ڈیل سے متعلق دستا ویزات جمع نہیں کرائی جا سکتیں کیونکہ یہ دستا ویزات وزارت دفاع کے پاس سے چوری ہو گئی ہیں،اس صورتحال کے بعد پورے بھارت میں تہلکہ مچ گیا اور کانگریس رہنما راہول گاندھی نے نریندر مود ی کیخلاف مقدمے کا مطالبہ کیا۔دوسری جانب مودی سرکار نے بھارتی اخبار ’’دی ہندو‘‘کو دھمکی دیتے ہوئے رافیل سے متعلق خبر کا سورس بتانے کا مطالبہ کردیا ہے۔مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر بھارتی صحافی شیکھر گپتا نے کہا ’’بھارتی سپریم کورٹ میں مودی سرکارکی جا نب سے صحافی این رام اور اخبار ’دی ہندو‘کو رافیل سے متعلق خبر پر سورس نہ بتانے پر دھمکیوں نے حیران کردیا ہے،حکومت کو اس حوالے

سے اٹھنے والے سوالات کے جواب دینے چاہئیں اور اس معاملے پر پیغام رساں اور درخواست گزار کو نشانے پر نہیں رکھنا چاہیے۔

بھارتی صحافی

مزید : صفحہ اول