لاہور کالج یونیورسٹی کے برطرف پروفیسر کی مبینہ طور پر خلاف ضابطہ بحالی کا انکشاف

لاہور کالج یونیورسٹی کے برطرف پروفیسر کی مبینہ طور پر خلاف ضابطہ بحالی کا ...

لاہور(لیڈی رپورٹر)لاہور کالج فار وویمن یونیورسٹی کے برطرف پروفیسر کی مبینہ طور پر خلاف ضابطہ بحالی کا انکشاف ہوا ہے،یونیورسٹی کے خزانچی عبدالغفار علی نے رجسٹرار،صوبائی وزیر اعلیٰ تعلیم،سیکرٹری ہائر ایجوکیشن،چیئرمین ایچ ای سی، چیف منسٹر پنجاب سمیت اعلی حکام کو اس بارے میں مراسلہ لکھ دیا جس میں برطرف کئے گئے پروفیسر آف اکنامکس ڈاکٹر افضل چوہدری کی بحالی کے معاملے میں گورنر/چانسلر کے احکامات پر یونیورسٹی انتظامیہ کی جانب سے حقیقی معنوں میں عمل درآمد نہ کرنے کی نشاندہی کی گئی ہے‘ٹریژرعبدالغفار علی نے اپنے مراسلے میں لکھا ہے کہ ڈاکٹر محمد افضل چوہدری کو 2016ء میں مختلف الزامات کے تحت نوکری سے برخاست کیا گیا ۔گورنر پنجاب نے اپیل کے جواب میں مارچ 2017ء میں یونیورسٹی سنڈیکیٹ کو حکم دیا کہ وہ برطرف پروفیسر کو ذاتی شنوائی کا موقع دے کر قواعد کے مطابق فیصلہ کریں‘تاہم سنڈیکیٹ نے پروفیسر کی ذاتی شنوائی کئے بغیر اسے ملازمت پر بحال کر دیاتھا۔ٹریژرلاہور کالج نے اپنے مراسلے میں کہا کہ برطرف پروفیسر کے خلاف بحالی کا نہ صرف نوٹس نہیں لیاگیا بلکہ مذکورہ پروفیسر کی جانب سے یونیورسٹی کے اعلیٰ عہدیداروں کی کردار کشی کی گئی جس کی سزا پیڈا ایکٹ کے مطابق دی جائے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1