نیشنل ایکشن پلان عملدر آمد قومی مفاد میں کیا جا رہا ہے، جمہوریت بہترین انتقام کی باتیں کرنیوالوں نے پاکستان سے انتقام لیا : وزیر اعظم

نیشنل ایکشن پلان عملدر آمد قومی مفاد میں کیا جا رہا ہے، جمہوریت بہترین ...

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر ، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد قومی مفاد میں کیا جارہا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں کیا جو گزشتہ روزان کی زیر صدارت منعقدہوا جس میں قومی سلامتی سے متعلق اہم فیصلوں پر کابینہ ارکان کو اعتماد میں لیا گیا اور نیشنل ایکشن پلان پرعمل درآمد کا جائزہ بھی لیا گیاجبکہ کابینہ نے نیشنل ایکشن پلان پر مکمل عملدرآمد کے عزم کا اعادہ کیا۔ ذرائع کے مطابق وزارت دا خلہ نے کالعدم تنظیموں پر پابندی سے متعلق وزیراعظم کو جبکہ وزیراعظم عمران خان نے کابینہ ارکان کو پاک بھارت کشیدہ صورتحال پر بریفنگ دی جس پر کابینہ ارکان نے صورتحال معمول پر لانے کیلئے وزیراعظم کے اقدامات کی تعریف کی۔کابینہ اجلاس میں وزیراعظم عمران خان کا مزید کہنا تھاپاک بھارت کشیدہ صورتحال میں مزید بہتری لانے کیلئے کوششیں جاری ہیں، پاکستان ذمہ دار ملک کے طور پر قیام امن کیلئے سفارتی کوششیں جاری رکھے گا۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا نیشنل ایکشن پلان پر تمام جماعتوں کا اتفاق رائے ہے۔ تمام پارٹیوں کے طے شدہ فیصلے کے مطابق ایکشن پلان پر عمل ہو گا۔

عمران خان

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،نیوز ایجنسیاں )وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے جمہوریت بہترین انتقام کی باتیں کرنیوالوں نے پاکستان سے انتقام لیا،معتبر شکل بنا کر باتیں کرنیوالے پرانے سیاستدانوں کو شرم آنی چاہیے، بدقسمتی سے پاکستان میں جھوٹی گواہی کو برا ہی نہیں سمجھا جاتا، ہمیں سچ بولنا ہوگا، سچ بولنے والے معاشرے ہی ترقی کرتے ہیں، ہمیں نئی سوچ اور اپنا مائنڈ سیٹ تبدیل کرنا ہوگا،تاجر برادری کے تعاون کے بغیر ملکی ترقی ممکن نہیں، یقین دلاتا ہوں تاجر برادری کیساتھ مکمل تعاون کریں گے، ایف بی آر میں جب تک اصلاحات نہیں ہونگی تب تک ٹیکس اکٹھا نہیں کر سکتے۔ جمعرات کو اسلام آباد میں تاجر برادری کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کا مزید کہنا تھا اداروں کو ٹھیک کرنے میں مشکلات پیش آ رہی ہیں۔ اصلاحات کر رہے ہیں زیادہ نہیں تھوڑی دیر لگے گی۔ انسان کوشش کرتا ہے عزت اور کامیابی اللہ دیتا ہے۔ میری جدوجہد کا مقصد ملک سے غربت ختم اور اولین ترجیح عام آدمی کی زندگی کو بہتر کرنا ہے۔ مجھے قوم پر مکمل اعتماد ہے۔ جب قوم اکٹھی ہو جائے تو اسے کوئی بھی شکست نہیں دے سکتا۔ چاہتا ہوں پوری دنیا میں لوگ ہرے پاسپورٹ کی عزت کریں۔ اللہ تعالی نے پاکستان کو بے شمار وسائل سے نوازا ہے۔ صرف سیاحت میں اضافہ کر لیں تو کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ختم ہوجائے گا۔ قرضوں کی قسطیں واپس کرنا مشکل وقت ہے۔ پاکستان میں سرمایہ کاروں کو لانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ آنیوالے دنوں میں سرمایہ کاری بڑھتی جائے گی۔کرپشن پر قابو پا کر اداروں کو مضبوط کر رہے ہیں۔ کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ کم ہو رہا ہے۔ ایف بی آر کو ٹھیک کرنے کیلئے پورا زور لگانا ہے۔ دنیا کا کوئی بھی معاشرہ ٹیکس دیئے بغیر ترقی نہیں کر سکتا۔ یقین دلاتا ہوں ملک سے ٹیکس اکٹھا کر کے دکھاؤں گا۔وزیراعظم عمران خان کا تقریب سے خطاب میں کہنا تھا سپریم کورٹ کے چیف جسٹس نے کہا لوگ عدالتوں میں جھوٹی گواہیاں دیتے ہیں، لندن میں اگر کوئی جھوٹی گواہی دے تو تین سال سزا ہوتی ہے لیکن بدقسمتی سے پاکستان میں جھوٹی گواہی کو برا ہی نہیں سمجھا جاتا۔

وزیر اعظم

مزید : کراچی صفحہ اول