پاک بھارت کشیدگی ، سعودی عرب کی مصالحتی پیشکش کا خیر مقدم کرتے ہیں

پاک بھارت کشیدگی ، سعودی عرب کی مصالحتی پیشکش کا خیر مقدم کرتے ہیں

اسلام آباد (این این آئی،مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہاہے کہ پاکستان اور بھارت کے مابین کشیدگی کے خاتمے کیلئے سعودی ولی عہد کی طرف سے مصالحت کی پیشکش کا خیرمقدم کرتے ہیں ۔ جمعرا ت کو سعودی عرب کے وزیر مملکت برائے خارجہ امور عادل الجبیر وزارتِ خارجہ پہنچے تو وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے اپنے سعودی ہم منصب کا خیر مقدم کیا۔ دوران ملاقات کے دوران پاک بھارت کشیدگی اور خطے میں امن و امان کی صورتحال سمیت دو طرفہ باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہاکہ دونوں وزرائے خارجہ نے پاک سعودی سپریم رابطہ کونسل کے تحت دو طرفہ اقتصادی، سیاسی اور سکیورٹی سے متعلقہ تعاون کو فروغ دینے سے متعلق طے کردہ امور کو معینہ مدت کے اندر پایہ تکمیل تک پہنچانے پر اتفاق کیا۔سعودی وزیر مملکت برائے خارجہ امور عادل الجبیرنے وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کو دونوں ممالک کے درمیان تصفیہ طلب امور کو پر امن طریقے سے حل کروانے کے سلسلے میں سعودی حکومت کی طرف سے مکمل اور بھرپور تعاون کا یقین دلایا۔قبل ازیں لکسمبرگ کے وزیر خارجہ کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان خطے میں امن و استحکام کا خواہشمند ہے جبکہ بھارت کی جارحانہ پالیسی کے باوجود صبر کا مظاہرہ کیا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ پلوامہ واقعہ کے بعد پاکستان کی طرف سے تحقیقات کی یقین دہانی کے باوجود بھارت نے دراندازی کی، پاکستان خطے میں امن و امان کا خواہاں ہے جبکہ کشیدگی کے خاتمے کیلئے بھارت کو ہرسطح پرمذاکرات کی دعوت دے چکے ہیں۔ انہوں نے کہا پاکستان نے جذبہ خیرسگالی کے تحت بھارتی پائلٹ کو واپس بھجوایا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان کا شروع دن سے یہی موقف رہا ہے کہ افغانستان کے مسئلے کا واحد حل مذاکرات ہیں۔ لکسمبرگ کے وزیر خارجہ نے جین ایز لبورن نے امریکا اور افغانستان کو مذاکرات کی میز پر لانے میں پاکستان کے مثبت اور موثر کردارکی تعریف کی اور پاکستان کی جانب سے بھارتی پائلٹ کی رہائی کے جذبے کو سراہا۔۔قبل ازیں پاکستان اور لکسمبرگ کے وزرائے خارجہ کے درمیان وفود کی سطح پر ملاقات وزارت خارجہ اسلام آباد میں ہوئی، جس میں خطے میں امن و امان کی صورتحال سے متعلق امور پرتبادلہ خیال کیا گیا، دونوں وزرائے خارجہ کے مابین دو طرفہ تجارتی اقتصادی، تعلیمی و سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے شعبوں میں تعاون کے فروغ اور دونوں ممالک کے مابین وفود کے تبادلوں پر اتفاق کیا۔ پاکستان کے دورے پر آئے لکسمبرگ کے اعلیٰ سطح کے وفد سے ملاقات میں شاہ محمود قریشی نے بھارتی جارحیت اور کشمیر میں جاری مظالم کا معاملہ بھی اٹھایا۔دریں اثناء بھارت میں متعین پاکستانی ہائی کمشنر سہیل محمود نے وزارت خارجہ میں شاہ محمود قریشی سے ملاقات کی،جس میں پاک بھارت تعلقات سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان کشیدگی میں کمی اور موجودہ صورتحال میں بہتری کا خواہاں ہے جبکہ براہ راست رابطے اس ضمن میں اہمیت کے حامل ہیں۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ14مارچ کو دونوں ممالک کرتار پور راہداری پر مشاورت کریں گے، دونوں ممالک کے درمیان تعلقات میں بہتری سے خطے میں امن کو استحکام حاصل ہوگا۔

شاہ محمود قریشی

مزید : کراچی صفحہ اول