وفاقی حکومت تھر کے عوام کو بیوقوف بنا رہی ہے، صحافیوں کو پیپلز پارٹی کا ایجنٹ کہنا اور دھمکیاں دینا قابل مذمت ہے:بیرسٹر مرتضیٰ وہاب

وفاقی حکومت تھر کے عوام کو بیوقوف بنا رہی ہے، صحافیوں کو پیپلز پارٹی کا ایجنٹ ...
وفاقی حکومت تھر کے عوام کو بیوقوف بنا رہی ہے، صحافیوں کو پیپلز پارٹی کا ایجنٹ کہنا اور دھمکیاں دینا قابل مذمت ہے:بیرسٹر مرتضیٰ وہاب

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعلیٰ سندھ کے مشیر اطلاعات و قانون بیرسٹر مرتضی وہاب نے وزیر اعظم کے پروٹوکول سیکیورٹی اور پی ٹی آئی کارکنان کی جانب سے صحافیوں سے بدتمیزی اور تشدد کی شدید مذمت کر تے ہو ئے کہا ہے کہ صحافیوں سے ناروا سلوک برداشت نہیں کیا جائے گا ،عمران خان اور پی ٹی آئی یہ بھول چکی ہے کہ میڈیا پاکستان کا چوتھا ستون ہے، صحافیوں کو پی پی کا ایجنٹ کہنا اور دھمکیاں دینا قابل مذمت ہے ۔

 سندھ اسمبلی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بیرسٹر مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ صحافیوں کا کام سچ دکھانا ہوتا ہے اور پی ٹی آئی سے سچ برداشت نہیں ہوتا،وزیر اعظم کے دورے پر پورے شہر چھاچھرو کو بند کرنا کہاں کا انصاف ہے ؟ پروٹوکول کی مخالفت کرنے والوں نے وزیر اعظم کی آمد پر پورے شہر کی آمد ورفت بند کروادی،جلسے کے دوران کسی بھی شخص کی آمد و رفت کو روکنا انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے،اگر کوئی شخص اپنے گھر جانا چاہ رہا ہے تو اسے جانے سے روکنا کہاں کا انصاف ہے ؟ ۔

بیرسٹر مرتضی وہاب نے مزید کہا کہ روزگا ر فراہم کرنے والوں نے آج تھر میں عوام سے روزگار بھی چھین لیا ہے،وزیراعظم کو تھر کے لوگوں کا احساس سات ماہ بعد ہوا ہے جب تھر میں قحط نفاذ کا اعلا ن کیا گیا اس وقت وزیراعظم کو خیال کیوں نہیں آیا؟ ۔ انہوں نے کہا کہ گورنر نے اعلان 5ماہ پہلے کیا تھا ، پی ٹی آئی والے وعدے کرتے ہیں عمل نہیں کرتے،وزیراعظم تھر  میں ایک سیاسی رہنما ء کے لئے آئے ہیں،وزیرخارجہ نے تھر سے انتخاب لڑا تھا لیکن وہ  یہاں کی گندم تو کابل لے گئے اورتھر کو کجھ نہ دیا گیا صرف عوام کو بیوقوف بنانے کے لئے سہانے خواب دکھائے جارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ وزیر خزانہ ڈالر کی قیمت کیوں بڑھی بتانے کے لئے تیار نہیں؟ ایف بی آر تقریبا ڈھائی سوارب کے واجبات وصول نہیں کرپایا لیکن الزامات کے لئے حکمرانوں کے پاس وقت ہے مگر مسائل حل کرنے کے لئے وقت نہیں ہے ۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ سندھ کو 116 ارب دیئے جائیں تاکہ ہم اپنے پروگرام پر عمل کرسکیں، وفاقی حکومت نے کراچی کے لئے بھی کچھ نہیں کیا، گرین لائن آج بھی نامکمل ہے ،وزیراعظم کے بارے میں تھر میں پوسٹرلگے ہوئے ہیں،وزیرخارجہ بھی نظرنہیں آئے ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ جماعت الدعوہ اورفلاح انسانیت کے 52ادارے تحویل میں لئے گئے ہیں،جیش محمد کے 4ادارے تحویل میں لئے ہیں جن کا انتظام سندھ حکومت کے پاس ہوگا۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی