ججوں،عملے پر اٹھنے والے اخراجات کی ریکوری کیلئے درخواست دائر

ججوں،عملے پر اٹھنے والے اخراجات کی ریکوری کیلئے درخواست دائر

  



اسلام آباد (خصوصی رپورٹ)سپریم کورٹ کے ججوں کے دورہ لاہور پر آنے والے سرکاری اخراجات کی ریکوری کے لئے اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست دائر کر دی گئی ہے۔یہ درخواست سول سوسائٹی نے محمد طاہر نامی شہری کے ذریعے اور طارق اسد ایڈووکیٹ کی وساطت سے دائر کی ہے۔درخواست گزار نے الزام لگایا ہے کہ سابق چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کے بیٹے کی شادی کے موقع پر سپریم کورٹ کے پانچ ججوں کے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں بنچ بنائے گئے تاکہ جج صاحبان اس شادی میں شرکت کر سکیں۔یہ بنچ مفاد عامہ میں لاہور نہیں آئے تھے کیونکہ مقدمات کی سماعت تو ویڈیو لنک کے ذریعے کرنے کا بھی انتظام موجود ہے۔ججوں اور ان کے عملے کے لاہور آنے پر سرکاری خزانہ سے اٹھنے والے اخراجات کی ریکوری کا حکم دیا جائے۔درخواست میں وفاقی حکومت بذریعہ سیکرٹری خزانہ اور رجسٹرار سپریم کورٹ کو فریق بنایا گیا ہے۔جسٹس (ر) میاں ثاقب نثار کے بیٹے کی شادی کے موقع پر کہا جاتا ہے کہ 100 ملین روپے خرچ کئے گئے جبکہ اُن کی بہو کے ولیمہ کے لباس پر ڈیڑھ کروڑ روپے خرچ کیا گیا۔ جسٹس (ر) میاں ثاقب ثار کے خلاف کارروائی کے لئے ایسٹس ریکوری یونٹس کو ہدایات کے بابت الگ درخواست دی جائے گی۔ درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ وزارت خزانہ سے استسفار کیا جائے کہ سپریم کورٹ کے فاضل ججوں کے لاہور دورہ پر کتنے اخراجات آئے جبکہ رجسٹر ار سپریم کورٹ کو ہدایات کی جائے کہ سپریم کورٹ کے فاضل ججوں اور عدالتی عملہ سے ٹی اے ڈی اے متفرق اخراجات اور وصول کی گئی تنخواہیں ریکور کی جائیں۔

درخواست دائر

مزید : صفحہ اول