رانا ثنا ء اللہ پر فردم جرم عائد نہ ہوسکی، 28مارچ کو بحث مکمل کرنے کاآخری موقع

      رانا ثنا ء اللہ پر فردم جرم عائد نہ ہوسکی، 28مارچ کو بحث مکمل کرنے کاآخری ...

  



لاہور(نامہ نگار)انسداد منشیات کی خصوصی عدالت میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما رانا ثناء اللہ پر پھر فرد جرم عائد نہ ہوسکی،عدلت نے کیس کی سماعت 28مارچ تک ملتوی کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر ملزمان کو فردجرم عائد کیلئے طلب کرلیا۔ عدالت نے رانا ثنااللہ کی جانب سے گواہوں کے بیانات کے ریکارڈ فراہم کرنے کی درخواست پر وکلاء کوبحث مکمل کرنے کا آخری موقع دیتے ہوئے سماعت ملتوی کی ہے۔علاوہ ازیں عدالت نے اثاثے منجمد کرنے سے متعلق دائردرخواست میں رانا ثنااللہ کو نقول فراہم کرنے کا حکم دیتے ہوئے اس کیس کی سماعت بھی 28مارچ تک ملتوی کر دی۔قبل ازیں منشیات کیس کی سماعت شروع ہوئی تورانا ثنا اللہ کیس کی سماعت شروع ہوئی تو راناثنا اللہ بروقت پیش نہیں ہوئے جس پر ان کے وکیل وقار رئیس نے عدالت کو بتایا کہ راناثنا اللہ راستے میں ہیں،10منٹ تک مہلت دی جاے جس پر فاضل جج نے کارروائی 10بجے تک ملتوی کردی،سماعت دوبارہ شروع ہوئی تو پراسیکیوٹر نے کہا کہ ملزمان پر فرد جرم لگائی جائے تاکہ دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے،ملزمان کی جانب سے حیلوں بہانوں سے درخواستیں دی جائیں گی اور پھر کیس کوالتوا ء میں ڈالنے کی کوشش کی جائے گی۔رانا ثناء اللہ کے وکیل فرہاد علی شاہ نے کہا کہ ہمیں بیانات کی کاپیاں دی جائیں، پراسیکیوشن کاپی نہیں دے رہی،جس پر پراسیکیوٹر نے کہا کہ سارا ریکارڈ دیا جا چکا ہے،رانا ثناء اللہ کے وکیل نے کہا کہ میں جب جرح کروں گا تو مجھے معلوم ہونا چاہیے کہ کس نے کیابیان دیا ہے،یہ کاپی نہیں دے رہے،عدالت نے وکیل کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آج فرد جرم عائد کرنی تھی آپ کی طرف سے درخواست آگئی،عدالت نے اپنے حکم میں لکھوایا ہے کہ آخری موقع دیتے ہوئے تاریخ دی جا رہی ہے اس کے بعد تاریخ نہیں دی جائے گی، پھرفرد جرم عائد ہوگی؟عدالت نے وکیل صفائی کو کاپی فراہم کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت 28مارچ تک ملتوی کردی۔بعدازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رانا ثناء اللہ نے کہاکہ میاں شہباز شریف آٹا اورچینی چوروں کے احتساب کیلئے مارچ کے آخر تک پاکستان آرہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پوری قوم مہنگائی کی چکی میں پس رہی ہے اوراگرحکومت نااہلوں کے ہاتھ میں رہی تو معاملات مزیدخراب ہوں گے۔رانا ثناء نے مزیدکہاکہ اعتزاز احسن کہتے ہیں مسلم لیگ (ن) مزاحمت نہیں کر سکتی تو عدلیہ بحالی میں مزاحمت کس نے کی،جب نواز شریف لانگ مارچ کیلئے سڑکوں پر نکلے تھے تواس وقت اعتزاز احسن گھر پر تھے۔

رانا ثناء

مزید : صفحہ آخر