ٹانک،سڑکوں کی تعمیر کا فنڈز بندر بانٹ کی نذر

ٹانک،سڑکوں کی تعمیر کا فنڈز بندر بانٹ کی نذر

  



ٹانک(نمائندہ خصوصی)ضم شدہ قبائلی اضلاع کیلئے دس سالہ ترقیاتی اے آئی پی پروگرام کھیتوں سے منڈی تک رسائی کیلئے رابطہ سڑکوں کی تعمیر کے لئے مختص دو ارب روپے جنوبی وزیرستان میں ذرعی مقاصد کے بجائے ضلعی،ہائی وے ڈویژن اور ٹھیکیدار وں کے درمیان بند بانٹ کی نذر ہوگئے۔تفصیلا ت کے مطابق صوبائی حکومت کی جانب سے جنو بی وزیرستان میں ضم شدہ اضلاع کے لئے دس سالہ ترقیاتی منصوبہ اے آئی پی پروگرام کے تحت محکمہ ذراعت کو کھیتوں سے منڈی تک رسائی کیلئے رابطہ سڑکوں کی تعمیر کیلئے مختص شدہ دو ارب روپے مذکورہ سڑکوں کی تعمیر کے بجائے ضلعی انتظامیہ، محکمہ ہائی وے ڈویژن اور چند ٹھیکیداروں کی ملی بھگت اور فنڈ کو ہڑپ کرنے کیلئے شہری آبادی سمیت دیگر غیر موضوں علاقوں کو فراہم کئے گئے ہیں واضح رہے کہ اس سلسلے میں قومی اسمبلی کی سٹینڈنگ کمیٹی نے اسسٹنٹ ڈائریکٹر ذراعت جنوبی وزیرستان کو بھی اسلام آباد طلب کیاتھا جہاں انہوں نے اپنی رپورٹ میں مختص فنڈ کو ذرعی مقاصد کے بجائے دوسرے منصوبوں میں ایڈجیسٹ کرنے کی نشاندہی کی تھی جنوبی وزیرستان سے تعلق رکھنے والے زمیندار ملک اے ڈی محسود نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ذرعی مقاصد کیلئے آنے والے مختص شدہ فنڈ کو ضلعی انتظامیہ، ہائی وے حکام اور ٹھیکیداروں کے درمیان ذاتی لالچ کے عوض تقسیم کیا گیا انہوں نے کہا کہ اربوں روپے کے فنڈ کی غیر منصفانہ تقسیم جنوبی وزیرستان کے زمینداروں کے گلہ گھونٹنے کے مترادف ہے انہوں نے مطالبہ کیا کہ مذکورہ فنڈکو ذرعی مقاصد کے لئے منصفانہ تقسیم کیا جائے بصور ت دیگر جنوبی وزیرستان کے زمیندار وزیرا علی ہاؤ س کے سامنے احتجاجی دھرنا دینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر