سخاکوٹ،غیر قانونی لیز کیخلاف عمائدین سراپا احتجاج

  سخاکوٹ،غیر قانونی لیز کیخلاف عمائدین سراپا احتجاج

  



سخاکوٹ(نمائندہ پاکستان)آمان کوٹ برنگ کے پانچ قوموں کے مشران نے زمُرد کان کے غیر قانونی لیز اور این او سی کے لئے اپلائی کرنے کے خلاف احتجاج کیا۔ لیز اور این او سی کینسل نہ کرنے کی صورت میں پولیو مہم سے بائیکاٹ کا اعلان کرینگے۔ منرل ڈیپارٹمنٹ خیبر پختونخواہ اور ڈپٹی کمشنر باجوڑ سمیت متعلقہ حکام نوٹس لیکر آمان کوٹ زمرد کان کا لیز منظور کرنے سے گریز کریں بصورت دیگرپولیو مہم سے بائیکاٹ کرینگے۔ بہادر شاہ نامی شخص نے 54ایکڑ آراضی کا لیز لینے کے لئے اپلائی کیا ہے جو کہ ہم پانچ قوموں کیساتھ ناا نصافی کے مترادف ہے۔اس سلسلے میں آمان کوٹ برنگ باجوڑ کے پانچ قوموں پائندہ خیل، طوری خیل، تاج بیگ خیل، بیر خیل اور شہزاد خیل کے مشران نے احتجاجی مظاہرہ اورمشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے پانچ قوموں سے تعلق رکھنے والے سرکردہ مشران تاج محمد، ذاکر زیب برنگ وال، حاجی اصغر خان، زر محمد، مکرم خان، آمیر خان اور سلطان خان نے مشترکہ طورپر کہا کہ مذکورہ آراضی جو کہ آدم خان اور مکرم خان کی ملکیت ہے اور اس زمرد کان میں ہم پانچ قوموں کے 20کان ہیں لیکن اس کے باوجود بہاد ر شاہ نامی شخص نے قوم اور علاقے کے عوام کو اعتماد میں لئے بغیر 54ایکڑ آراضی کا لیز اور این او سی لینے کے لئے اپلائی کیا ہے جس سے قوموں اور علاقے کے لوگوں میں شدید بے چینی اور غم وغصہ پایا جاتا ہے جس سے قوموں کے درمیان خون خرابے کا خدشہ بڑھ گیاہے اور کسی صورت فرد واحد کو زمرد کان کی لیز یا این او سی دینے کا فیصلہ قبول نہیں کرینگے۔انہو نے کہا کہ اس لیز اور این او سی کا مقامی ممبر قومی اسمبلی اور ممبر صوبائی اسمبلی کو بھی علم نہیں ہے۔ قومی مشران نے کہا کہ ہم کسی صورت آمن و آمان خراب نہیں کرنا چاہتے اور قانون کی مکمل پاسداری کرتے ہیں لیکن اپنے حق پر کسی کو قبضہ کرنے کی اجازت نہیں دینگے۔ انہوں نے صوبائی ڈائریکٹر منرل خیبر پختونخوا ہ، ڈپٹی کمشنر باجوڑ سمیت صوبائی وزیر اعلیٰ محمود خان، مقامی ایم این اے گل داد خان، ممبر صوبائی اسمبلی انجینئر اجمل خان اور دیگر حکام سے آمان کوٹ زمرد کان کے لیز اور این او سی لینے کے لئے اپلائی کرنے کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ فوری طور پر مذکورہ این او سی اور لیز کے لئے اپلائی کینسل کریں اور قوموں کو اعتماد میں لیکرانصاف پر مبنی کاروائی کی جائے۔ پانچ قوموں پائندہ خیل، طوری خیل، تاج بیگ خیل، بیر خیل اور شہزاد خیل کے مشران نے متفقہ طور پر فیصلہ کیا کہ ہم کسی صورت فرد واحد کو این او سی اور لیز دینے کا فیصلہ قبول نہیں کرینگے اور اپنے حق حاصل کرنے کے لئے کسی بھی قربانی کے لئے تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ڈپٹی کمشنر باجوڑ نے ہمیں انصاف فراہم کرنے کا بھی وعدہ کیا ہے اس لئے ہم اُمید رکھتے ہیں کہ فرد واحد کو پورے علاقے کا لیز اور این او سی نہیں دینگے اور قوموں کو اعتماد میں لینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر