دوخواتین قتل، 3لاشیں برآمد، مختلف حادثات میں 7افراد جاں بحق

  دوخواتین قتل، 3لاشیں برآمد، مختلف حادثات میں 7افراد جاں بحق

  



ملتان، وہاڑی، ماچھیوال،عالی والا،رحیم یارخان، خانیوال، خانقاہ شریف، محسن وال (سپیشل رپورٹر، بیورو رپورٹ، نمائندہ خصوصی، نامہ نگار، نمائندہ پاکستان)سبزی منڈی کے عقبی روڈ پر واقع رانا سٹاپ کے قریب بس اور موٹر سائیکل تصادم میں خاتون جاں بحق ہوگئی۔جبکہ ریسکیو نے زخمیوں کو طبی امداد دینے کے بعد نشتر ہسپتال منتقل کردیا ہے۔جاں بحق ہونے والی 26 سالہ(بقیہ نمبر15صفحہ12پر)

نصرت ہے اور زخمی ہونے والوں میں عظمی اور بشیر کا نام شامل ہے۔اطلاع ملنے پر ریسکیو نے مذکورہ زخمیوں کو طبی امداد دینے کے بعد نشتر ہسپتال منتقل کردیا۔جبکہ جائے وقوعہ پر مقامی پولیس بھی پہنچ گئی۔جہنوں نے موقع سے شواہد اکٹھے کیئے۔اور ضروری قانونی کاروائی کی ہے۔مکان کی چھت گرنے سے شادی والا گھر ماتم کدہ بن گیا ایک بچی ہلاک تین شدید زخمی۔ریسکیو نے فوری طور پر ملبہ ہٹا کر زخمیوں اور نعش کو نکالا۔زمیوں کو فوری ڈسٹرکٹ ہسپتال پہنچا یا جہاں زخمیوں کی حالت خطرے سے باہر ہے پولیس تھانہ ماچھیوال کے ایس ایچ او چوہدری حقنواز بھی موقع پر پہنچ گئے۔تفصیل کے مطابق دن بارہ بجے محمد ریاض کی بیٹی کی شادی تھی صبح لاہور سے بارات آنی تھی شادی کی مصروفیات تھیں تمام اہل خانہ اور لاہور سے آئے ہوئے مہمان بھی کمرے میں بیٹھے تھے کہ اچانک چھت ان پر آگری جس سے لاہوت ر آئی ہوئی 10سالہ ارباب دختر طالب حسین موقع پر جاں بحق ہو گئی۔جبکہ 32/33 سالہ متوفیہ کی والدہ فرزانہ بی بی زوجہ طالب حسین ۔5 سالہ متوفیہ کی بہن مہتاب بی بی دختر طالب حسین زخمی ہو گئیں۔ اور محمد ریاض کی بیٹی شاہدہ بی بی بھی زخمی ہو گئیں جنہیں ریسکیو نے فوری موقع پر پہنچ کر ملبے تلے سے نکالا اور طبی امداد دیکر ہسپتال پہچا دیا جہاں ان کی حالت خطرے سے باہر ہے۔اطلاع ملتے ہی ایس ایچ او پولیس تھانہ ماچھیوال بھی موقع پر پہنچ گئے یہ بھی واضح رہے کہ محمد ریاض مالک مکان کی بیٹی کی صبح لاہور سے بارات آنی تھی اسی سلسلہ میں ظالب حسین اور اس کے بچے آئے ہوئے تھے صبح طالب حسین کے بھتیجے کی بارات 21/W.Bمیں محمد ریاض کے گھر آمد تھی۔ قاسم بیلہ کے علاقہ چھوٹی پلی کے پاس سیڑھیوں سے گرنے سے پنتالیس سالہ شخص جاں بحق ہوگیا۔بتایا جارہا ہے کہ (45) سالہ ہارون نامی شخص کو دل کا عارضہ بھی لاحق تھا۔جس کو گرنے کے باعث شدید چوٹیں آئیں ہیں۔اور وہ اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھا۔پولیس اور ریسکیو نے موقع پر پہنچ کر لاش کو اپنی تحویل لیکر بعد میں لواحقین کے حوالے کردیا گیا ہے۔ تھانہ کوٹ چھٹہ کی حدود میں بستی کوری میں چانڈیہ برادری کی حسنہ کی دن دیہاڑے لاش برآمد ہوئی اور 15 کی کال پر ڈی ایس پی چوہدری مسعود نفری کے ہمراہ وارثان کے گھر پہنچ گئے اس موقع پر لڑکی کے چچا احسان اللہ چانڈیہ نے پولیس کو بیان دیا کہ متوفیہ کے شوہر زاہد اور دیور مجاہد نے مل کر ہماری بچی کو قتل کیا مزید ان کا کہنا تھا کہ ہماری بچی کے ساتھ ان ظالم لوگوں کا جھگڑا رہتا تھا جس پر ان کے پلان کے مطابق ان کو پہلے زہر دے دیا اور زہر پلانے کے بعدلاش پنکھا سے لٹکا دیا تاکہ خودکشی کا روپ دیا جائے ڈی ایس پی کوٹ چھٹہ چوہدری مسعود نے وارثان کی درخواست پرلاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے ڈسٹرکٹ ہسپتال ڈیرہ غازیخان بھیج دیا گیا رپورٹ کے بعد ملزمان کے خلاف کاروائی ہو گی۔ تھانہ شیدائی کی حدود ظفر آباد کے رہائشی محمد رمضان نے پولیس کو اپنی تحریری شکایت میں بیان کیا کہ اسکی ہمشیرہ تین بچوں کی ماں رقیہ بی بی کا اپنے شوہر سعید احمد سے گھریلو ناچاقی پر روٹھ کر دو سال سے میکے رہائشی پذیر تھی اور ملزم محمد ایوب سے تعلقات استوار کررکھے تھے جو کہ رقیہ بی بی کو چپکے سے رات کو وہ گھر ملنے آتا تھا جس کو متعدد بار منع کیا اور جھگڑا بھی ہوا لیکن وہ منع نا ہوا اور ہمشیرہ رقیہ بی بی نے کسی اور سے تعلقات استوار کرلیے ملزم محمد ایوب سے تعلق ختم کر دیا جس کی رنجش ملزم نے دل میں رکھ لی اور موقع پاکر ملزم محمد ایوب رات کو انکے گھر آگیا اور انکو سویا ہوا دیکھ کر ہمشیرہ کے کمرہ میں داخل ہوگیا اور رقیہ بی بی کو سوتے ہوئے دیکھ کر تکیہ اس کے منہ پر رکھ کر موت کے گھاٹ اتار دیا اور کمرہ میں موجود لاکھوں روپے مالیت کی نقدی اور طلائی زیورات اٹھاکر فرار ہوگیا‘ اطلاع پاکر پولیس نے موقع پر پہنچ کر مقتولہ کی لاش تحویل میں لیکر پوسٹمارٹم کے لئے ہسپتال منتقل کردی‘ بھائی محمد رمضان کی رپورٹ پر پولیس نے قتل کا مقدمہ درج کر کے کارروائی شروع کردی ہے۔ ٹریفک کے مختلف حادثات میں شدید زخمی ہونے والی خاتون سمیت 3 افراد ہسپتال میں دم توڑ گئے۔ تفصیل کے مطابق پہلا حادثہ ڈیرہ اللہ یار کی رہائشی 45 سالہ صغریٰ بی بی کے ساتھ پیش آیا جو اپنے بیٹے کے ہمراہ موٹر سائیکل پر سوار ہو کر جا رہی تھی کہ تیز رفتاری کے باعث سامنے سے آنے والی کار سے ٹکرا گئے اور شدید زخمی ہو گئی‘دوسرا حادثہ اوباڑو کے رہائشی 18 سالہ مرتضیٰ کے ساتھ پیش آیا جو موٹر سائیکل پر سوار ہو کر جا رہا تھا کہ سامنے سے آنے والی مسافر وین سے ٹکرا گیا اور شدید زخمی ہو گیا جبکہ تیسرا حادثہ ٹھل حسن کے رہائشی 18 سالہ محمد آفتاب کے ساتھ پیش آیا جو موٹر سائیکل سوار ہو کر قومی شاہراہ پر جا رہا تھا کہ پیچھے سے آنے واے ٹرالر نے کچل دیا جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہو گیا‘ زخمی ہونے والے تینوں افراد کو ورثاء نے طبی امداد کیلئے شیخ زید ہسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود تینوں افراد جانبر نہ ہو پائے اور دم توڑ گئے جبکہ مختلف واقعات میں زخمی ہونیوالے46 افرادجن میں چک 72 کا 12 سالہ محمد معاویہ‘ کوٹ سمابہ کی 34 سالہ نجمہ بی بی‘ مو مبارک کی 14 سالہ ممتاز بی بی‘ریلوے کالونی کا 50 سالہ محمد یاسین‘ بھٹہ کالونی کا 20 سالہ زین علی اور گھوٹکی کا رہائشی 30 سالہ عمران خان وغیرہ کو ہسپتال میں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے۔ٹرسائیکل ڈئیور سے ٹکر گئی جس کے نتیجہ میں ایک شخص جاں بحق ہوگیا گزشتہ روز خانیوال کے علاقہ نیازی چوک نیو بہاولپور روڈ پر موٹرسائیکل ڈئیور سے ٹکرا گئی جس کے نتیجہ میں ایک شخص موقع پر جاں بحق ہوگیا جبکہ ایک زخمی ہوگیا ریسکیو1122نے طبی ا مداد کے بعد زخمی افراد ہسپتال منتقل کیا۔نیشنل ہائی وے خانقاہ شریف فیضان مدینہ کے سامنے روڈ پرساٹھ سالہ نامعلوم بزرگ کی نعش ملی ہے جس کی اطلاح پولیس سمہ سٹہ کو دی گئی تو اے ایس آئی نے موقع پرلاش کو اپنے قبضہ میں لے کر رولرہیلتھ سینٹر خانقاہ شریف میں لے گئے اور پوسٹ مارٹم کرواکر نعش کو قبرستان میں دفن کرکے اور وارثان کی تلاش شروع کردی ہے۔میاں چنوں علاوہ ازیں نشہ آور انجیکشن لگانے کے عادی 2نوجوان چل بسے،لاشیں لاری اڈا کے قریب سے برآمد شہر بھر میں نشے کے عادی افراد کی چلتی پھرتی لاشیں انتظامیہ اور ترقی یافتہ ملک پاکستان کے حکمرانوں کیلئے سوالیہ نشان ہے،میاں چنوں میں آئے روز نشے کے عادی افراد مو ت کے منہ میں جا رہے ہیں،گزشتہ روز بھی لای اڈا کے قریب سے 2نوجوانوں کی لاشیں ملی،جو کئی سالوں سے نشے آور انجکیشن لگانے کے عادی تھے،پولیس تھانہ سٹی نے نعشوں کو ٹی ایچ کیو ہسپتال منتقل کردیا۔

قتل

مزید : ملتان صفحہ آخر