صوبے میں تہذیبوں کا ثقافتی ورثہ موجود ہے،شوکت یوسفزئی

صوبے میں تہذیبوں کا ثقافتی ورثہ موجود ہے،شوکت یوسفزئی

  



پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبرپختونخوا کے وزیر ثقافت اور محنت شوکت یوسفزئی نے کہا ہے کہ ہمارے خطے کی ثقافت تاریخی ہے جو الگ شناخت رکھتی ہیں۔ قوموں کی تاریخ اور تمدن ان کے ثقافتی ورثے سے معلوم ہوتی ہے۔ ہمارے صوبے میں مختلف تہذیبوں کا ثقافتی ورثہ موجود ہے جس کو مزید محفوظ بنانے اور دنیا کو دکھانے کے لیے منصوبے ترتیب دیے جائیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے محکمہ ثقافت کا قلمدان سنبھالے کے بعد محکمہ کی طرف سے دیئے گئے بریفنگ کے دوران کیا۔ سیکرٹری ثقافت اور کھیل خوشحال خان اور ڈائریکٹریس ثقافت شمع نعمت نے صوبائی وزیر کو محکمہ کے حوالے سے تفصیلی بریفننگ دی اور آنے والے ثقافتی پروگراموں اور منصوبوں کے بارے میں آگاہ کیا۔ شوکت یوسفزئی نے بریفننگ کے دوران کہا کہ فنکار برادری کا خطے کی ثقافت زندہ رکھنے میں اہم کردار رہا ہے۔ فنکار برادری کے مسائل کے حل اور ان کے فلاح و بہبود کے منصوبوں پر خصوصی توجہ دی جائے گی۔ ان کے لیے ایسے منصوبے ترتیب دئیے جائیں جس سے ثقافت کے ساتھ ساتھ صوبے اور فنکاروں کو بھی فائدہ ہو۔ صوبے میں موجود تمام ثقافتیں ہمارے لیے ایک جیسی اہمیت رکھتی ہیں تمام ثقافتوں کو بین الاقوامی سطح پر اجاگر کرنے کیلئے مربوط حکمت عملی پر کام کیا جائے گا کیونکہ بیرونی ممالک کے لوگ ہمارے ثقافت کو بہت پسند کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ قبائلی اضلاع اپنی ایک تاریخ اور ثقافت رکھتی ہے جو امن، محبت اور خلوص کا گہوارہ ہے قبائلی اضلاع میں ثقافتی پروگراموں کے انعقاد کے لیے منصوبہ بندی کی جائے صوبے کے مختلف علاقوں میں ایسے پروگراموں کا انعقاد کیا جائے جس سے امن اور ثقافت کی ترویج مؤثر طریقے سے ہو۔

مزید : صفحہ اول