مسلمانوں کے لیے بڑی خوشخبری، حرم کو طواف کے لیے کھول دیا گیا، لیکن ایک شرط ابھی بھی لاگو

مسلمانوں کے لیے بڑی خوشخبری، حرم کو طواف کے لیے کھول دیا گیا، لیکن ایک شرط ...
مسلمانوں کے لیے بڑی خوشخبری، حرم کو طواف کے لیے کھول دیا گیا، لیکن ایک شرط ابھی بھی لاگو

  



مکہ مکرمہ(مانیٹرنگ ڈیسک) چند روز قبل کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر سعودی حکومت نے حرم کو طواف کے لیے بند کر دیا تھا جس کا مقصد ان مقدس مقامات پر سپرے وغیرہ کرنا تھا تاکہ اگر وہاں وائرس ہو تو اس کا خاتمہ ہو جائے۔ یہ عمل مکمل ہونے کے بعد مسجد حرام کو کل دوبارہ کھول دیا گیا ہے اور لوگوں کو طواف کی اجازت دے دی گئی ہے تاہم انہیں بیت اللہ کو چھونے اور حجراسود کو بوسہ دینے کی تاحال ممانعت ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ہفتے کے روز شاہ سلمان کے حکم پر بیت اللہ کو مسلمانوں کے لیے کھولا گیا تاہم تاحال عمرہ ادا کرنے کی اجازت نہیں دی گئی۔ پابندی ہٹنے کے بعد سینکڑوں مسلمان بیت اللہ کا طواف کر رہے ہیں مگر دو پہاڑیوں کے درمیان کا وہ راستہ تاحال بند ہے جن کے درمیان 7بار سعی کیے بغیر عمرہ مکمل نہیں ہوتا۔ اس کے علاوہ خانہ کعبہ کے اردگرد بھی رکاوٹیں لگا دی گئی ہیں تاکہ لوگ بیت اللہ کو نہ چھوئیں۔واضح رہے کہ گزشتہ جمعرات کے روز مسجد حرام کو سٹرلائزیشن کے لیے بند کیا گیا تھا اور ایک دن کے وقفے سے ہفتے کے روز اسے دوبارہ کھول دیا گیا۔ سعودی حکومت ملک میں کورونا وائرس کا داخلہ اور پھیلاﺅ روکنے کے لیے انتہائی کڑے اقدامات کر رہی ہے۔ اسی سلسلے میں گزشتہ روز حکومت نے کویت، متحدہ عرب امارات اور عمان کے ساتھ اپنے زمینی راستے بھی بند کر دیئے ہیں۔

مزید : عرب دنیا