دنیابھر کی ایئرلائنز خالی فلائٹس چلانے لگیں، کورونا وائرس کی وجہ سے پروازیں بند کیوں نہیں کر رہیں؟ جان کر آپ کو بھی حیرت ہوگی

دنیابھر کی ایئرلائنز خالی فلائٹس چلانے لگیں، کورونا وائرس کی وجہ سے پروازیں ...
دنیابھر کی ایئرلائنز خالی فلائٹس چلانے لگیں، کورونا وائرس کی وجہ سے پروازیں بند کیوں نہیں کر رہیں؟ جان کر آپ کو بھی حیرت ہوگی

  



نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس کے باعث کئی طرح کے کاروباروں کو شدید نقصان پہنچ رہا ہے۔ اس سے سب سے زیادہ ایوی ایشن انڈسٹری متاثر ہو رہی ہے کیونکہ بیشتر ممالک اپنے ہاں غیرملکیوں کا داخلہ بند کر چکے ہیں، جس کے نتیجے میں ایئرلائنز کی پروازیں زیادہ تر خالی یہاں سے وہاں سفر کر رہی ہیں۔ بزنس انسائیڈر کے مطابق فضائی کمپنیاں ہزاروں گیلن ایندھن ضائع کرکے خالی پروازیں چلانے پر اس لیے مجبور ہیں تاکہ وہ اپنی فلائٹ سلاٹس (Flight Slots)برقرار رکھ سکیں۔

رپورٹ کے مطابق یورپی قوانین کے مطابق فضائی کمپنیوں کے لیے لازمی ہے کہ وہ اپنی مختص کی گئی پروازیں ہر حال میں چلائیں گی ورنہ ان کی وہ سلاٹ ختم ہو جائے گی اور اس کے بعد وہ اس روٹ پر پرواز نہیں چلا سکیں گی۔ کئی کمپنیاں اب تک یورپی ممالک سے دیگر دنیا میں خالی پروازیں چلانے پر ہزاروں گیلن ایندھن فالتو اڑا چکی ہیں اور کروڑوں کا نقصان کروا چکی ہیں۔ ایوی ایشن انڈسٹری کے ایک گروپ کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث ممکنہ طور پر انڈسٹری کو 11ارب ڈالر سے زائد کا نقصان پہنچ سکتا ہے۔

برطانوی وزیرٹرانسپورٹ نے فلائٹ ریگولیٹرز کو لکھا ہے کہ ”یوز اٹ آر لوز اٹ“ (Use it or lose it)۔ یعنی اپنے روٹس پر پروازیں چلاﺅ ورنہ تمہارے وہ روٹس ختم کر دیئے جائیں گے۔ واضح رہے کہ کورونا وائرس کے باعث شدید نقصان ہونے پر یورپی فضائی کمپنی ’فلائی بی‘ دیوالیہ ہو چکی ہے ، جس نے گزشتہ ہفتے اچانک اپنے تمام آپریشنز روک دیئے۔ کئی پروازیں منسوخ کر دیں اور کئی پروازوں کے روٹ بدل کر غلط ایئرپورٹس پر اتار دی گئیں جس سے ہزاروں مسافر دربدر ہو گئے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر کورونا وائرس کی وباءکا خطرہ جلد نہ ٹلا تو اور بہت سی فضائی کمپنیوں کا یہی انجام ہو سکتا ہے۔

مزید : بین الاقوامی