خواتین میں بریسٹ کینسر کی تشخیص کیلئے سمارٹ فون ایپ متعارف

   خواتین میں بریسٹ کینسر کی تشخیص کیلئے سمارٹ فون ایپ متعارف

  

لاہور (این این آئی)پاکستانی خواتین کیلئے بریسٹ کینسر کی تشخیص کیلئے سمارٹ فون ایپ متعارف کروادی گئی۔انٹرنیشنل ایجنسی فار ریسرچ آن کینسر (آئی اے آر سی) کے مطابق اب بریسٹ کینسر سب سے زیادہ تشخیص ہونے والی قسم ہے۔ پاکستان میں ہرسال 50 ہزار خواتین بریسٹ کینسر (چھاتی کے سرطان) کی وجہ سے موت کا شکار ہوجاتی ہیں جو ایشیا میں بریسٹ کینسر کا شکار ہونے والی خواتین کی سب سے زیادہ شرح ہے جبکہ سالانہ اس بیماری کے 90 ہزار نئے کیسز رپورٹ ہورہے ہیں۔ کراچی میں ایک سیمینار کے دوران پاکستان ٹرسٹ کی بانی اور صدر ڈاکٹر زبیدہ قاضی کا کہنا تھا کہ بریسٹ کینسر کی ابتدائی تشخیص اور عوامی آگاہی مہم کے بعد سے پوری دنیا میں اس کے کیسز میں 30 فیصد تک کمی آئی ہے پاکستان میں زندگی کے کسی نہ کسی مرحلے پر ہر 9 میں سے ایک خاتون بریسٹ کینسر کا شکار ہوجاتی ہے۔پنک پاکستان ٹرسٹ کی صدر کے بقول ملک میں 49 فیصد آبادی خواتین پر مشتمل ہے، جن میں 40 سے 45 سال کی عمر کی 30 لاکھ خواتین ہیں جنہیں اس مرض سے زیادہ خطرہ ہے۔یہی وجہ ہے کہ پنک پاکستان نے اس حوالے سے خطرے سے دوچار خواتین میں شعور اجاگر کرنے کے لیے ایک سمارٹ فون ایپ کو تیار کیا ہے جو اینڈرائیڈ صارفین کیلئے دستیاب ہے۔

بریسٹ کینسر

مزید :

صفحہ آخر -