ملتان پولیس، جونیئر سب انسپکٹرز بدستور ایس ایچ اوز، سسٹم درہم برہم

ملتان پولیس، جونیئر سب انسپکٹرز بدستور ایس ایچ اوز، سسٹم درہم برہم

  

ملتان (وقائع نگار)  ضلع ملتان میں بغیر اپر کورس پاس ایس ایچ اوز کی تعیناتی بدستور قائم ہے۔جس پر پولیس ملازمین نے اپنے ہی سینئر پولیس افسران کی ناقص پالیسی کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔اور تشویش پر اظہار کیا ہے۔واضح رہے سابق آر پی او ملتان مہر وسیم سیال نے اپنی تعیناتی کے دوران تقریبا دو ماہ قبل ایک مراسلہ جاری کیا۔جس میں انہوں (بقیہ نمبر47صفحہ7پر)

نے ہدایت کی ہے کہ ملتان۔خانیوال۔لودھراں اور وہاڑی کے ڈسٹرکٹ میں جونیئر سب انسپکٹروں کو ایس ایچ اوز کو تعینات کیا گیا ہے۔انکو فوری طور پر تبدیل کرکے تفتیش اور پولیس کے انتظامی امور سیکھائے جائیں۔مراسلے جاری ہوتے ہی ملتان پولیس کے ضلعی پولیس افسران نے خاص دلچسپی کی خاطر اپر کورس کے پاس کیئے بغیر جونیر سب انسپکٹروں کو ایس ایچ اوز کے عہدہ پر براجمان رکھا ہوا ہے۔ضلعی پولیس افسران نے آر پی او کے احکامات کو صرف کاغذوں تک عمل درآمد کیا۔اور تھانوں میں جونیئر سب انسپکٹروں کو ایس ایچ او کے عہدہ سے کاغذوں میں ہٹاکر ایڈیشنل ایس ایچ اوز کے عہدہ تعینات کرکے ایس ایچ او کا کام لیا جارہا ہے۔یاد رہے موجودہ آر پی او ملتان خرم شاہ نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ جونیئر سب انسپکٹر کو فیلڈ کی نوکری کروائی جائے۔تھانے میں ایس ایچ او انسپکٹر عہدے کا لگنا چاہیے۔یا سینئر ترین اپر کورس پاس ایس ایچ اوز کو تعینات کیا جائے۔مگر اس سب باتوں کے باوجود جونیئر سب انسپکٹر تھانوں میں ایس ایچ اوز تعینات ہیں۔یہاں شہریوں نے الزام لگایا ہے کہ جونیئر سب انسپکٹروں کو اپنے سینئر پولیس افسران کے سامنے پیش ہونے اور بیھٹنے کا طریقہ کار تک نہیں معلوم ہے۔کچھ عرصہ ایک جونیئر سب انسپکٹر نے ایک ایس ایس پی کے ساتھ بدتمیزی بھی کی تھی۔جس کے خلاف رپورٹ بناکر ضلعی پولیس افسر کو بھیجوائی گئی۔جس پر عمل تو نہیں ہو سکا۔ہاں مگر موصوف اس وقت ایک تھانے میں ایس ایچ او تعینات ہیں۔شہریوں اور پولیس ملازمین کی ایک بہت بڑی تعداد نے آر پی او ملتان سے مطالبہ کیا ہے۔ملتان پولیس افسران اپنی پالیسی پر نظر ثانی کریں۔اور سینئر تجربہ کار انسپکٹروں اور اپر کورس پاس سب انسپکٹروں کو تھانہ کا اہم ترین عہدے ایس ایچ او پر لگایا جائے۔

درہم برہم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -