خواتین کو حقوق دئیے بغیر اسلامی  فلاحی معاشرے کا قیام نامکمل، افتخار  خان، سلیم بھٹی،صائمہ عامر ایڈووکیٹ

  خواتین کو حقوق دئیے بغیر اسلامی  فلاحی معاشرے کا قیام نامکمل، افتخار  ...

  

 بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر)خواتین کو حقوق دئے بغیر اسلامی فلاحی معاشرہ کا قیام نامکمل ہے،اسلامی ملک ہونے کے باوجود پاکستان میں خواتین کے حقوق غصب ہیں۔نوابزادہ افتخار احمد خان رکن قومی اسمبلی وانفارمیشن سیکریٹری،محمد سلیم بھٹی ڈپٹی سیکریٹری انفارمیشن(بقیہ نمبر16صفحہ6پر)

 پاکستان پیپلز پارٹی جنوبی پنجاب,صائمہ عامر خان ایڈووکیٹ جنرل سیکریٹری شعبہ خواتین پی پی پی جنوبی پنجاب،راجہ محمد سلیم ڈویژنل جنرل سیکریٹری ملتان۔شاکر مرزا،ایم بی مسعود ہاشمی ایڈووکیٹ،مسعود عزیز خان ایڈووکیٹ،بلال بھٹی ایڈووکیٹ،سید سعیدالدین، اختر محمود ہاشمی ایڈووکیٹ،ملک شفقت محمود ایڈووکیٹ،ملک اختر شبیر ایڈووکیٹ،محمد آصف بھارا ایڈووکیٹ،چوہدری اشفاق تیجہ ایڈووکیٹ۔حاجی محمد ریاض،شاہ خضر حسن،ملک امتیاز چنڑ،جاوید رضا ریمنڈ ایدووکیٹ،پیٹر جان مٹو،عامر راجپوت نے خواتین کے عالمی دن کے موقع پر پاکستان میں خواتین کے حقوق کی پامالی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمارے پیارے نبی حضرت محمد ﷺ نے عورت کے اسلام میں اعلی وارفع مقام ماں،بیٹی،بہن اور بیوی کے روپ میں بیان کئے ہیں،لیکن بدقسمتی سے اسلامی ملک ہونے کے باوجود پاکستام دنیا بھر میں خواتین کے حقوق کی فراہمی میں ناکام ہے ایک ایسا ملک جہاں دینی اور آئینی لحاظ سے عورت کوبلند مقام دیا گیا ہے وہاں بھی عورت صنفی لحاظ سے مرد کے مقابلے میں کمتر ذندگی گزاررہی ہے،پاکستان کا شمار دنیا بھر میں نچلے درجوں میں شامل ہے۔نوابزادہ افتخار نے کہا کہ کیوں کہ ہم ہندوستان میں ہندوؤں کے ساتھ رہ کر عورتوں کے حقوق پامال کرنے کی برائی میں ملوث ہوچکے ہیں،ہمارا دین اور آئین عورت کو جینے کے ہر شعبہ میں کھانے،پینے،تعلیم کے حصول،روزگار کے حصول،ووٹ کے حصول،جائداد کے حق،شادی کے حق میں مردوں کے برابر حتی کہ بچوں کی پیدائش کے حوالے سے بھی خواتین کے حقوق کی یکساں حیثیت ہے، آج بھی زمانہ جاہلیت کے طرز ذندگی پر خواتین کو ان کے حقوق دینے میں پس وپیش سے کام لیا جاتا ہے۔کبھی مذہب کبھی غیرت اور کبھی رسم ورواج کی آڑ میں خواتین کا استحصال کیا جارہا ہے۔آئینی طور پر خواتین کے حقوق کی حفاظت کے قوانین کی موجودگی کے باوجود ہمارا نظام کام کرنے والی خواتین اور طالب علم خواتین سمیت گھریلو خواتین کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام ہے،سلیم بھٹی نے کہا کہ صرف قوانین کے اجراء سے صنفی مساوی حقوق مہیا نہیں کئے جاسکتے اس کے لئے ہم سب کو بحیثیت قوم مشترکہ اسلامی طرز عمل کے ذریعے عورتوں کو تحفظ فراہم کر کے اسلامی اقدار کی پاسداری کرنا ہوگی،بھٹو شہید اور بینظیر شہید کے اصولوں کو اپناتے ہوئے پاکستان پیپلز پارٹی نے جہاں عورتوں کیلئے الگ بینک،پولیس اسٹیشن اور میڈکل کالجز و یونیورسٹیاں قائم کیں وہیں محترمہ بے نظیر بھٹو کو اسلامی دنیا کی پہلی خاتون وزیر اعظم بنا کرخواتین کی اہمیت کو اجاگر کیا۔آج بھی پاکستان پیپلز پارٹی میں خواتین پارٹی کے اہم عہدوں پر خدمات انجام دے رہی ہیں۔

صائمہ افتخار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -