جھوٹ کے بعد سیاست میں بدمعاشی کو  فروغ نہ دیاجائے، لیگی رہنماؤں کا ردعمل

جھوٹ کے بعد سیاست میں بدمعاشی کو  فروغ نہ دیاجائے، لیگی رہنماؤں کا ردعمل

  

  خانیوال (بیورو نیوز)  سینٹ میں عبرت ناک شکست کے بعد قومی(بقیہ نمبر9صفحہ6پر)

 اسمبلی میں جبر اور دھونس سے اعتماد کا ڈرامہ رچایا گیا ہونا تو یہ چاہیے تھا کہ سینٹ شکست کے بعد اصول اور مغربی طرز سیاست کی مثالیں دینے والے سلیکٹیڈ کا استعفی سامنا آتا مگر عمران خان کی حقیقت ہاتھی کے دانت جیسی ہے یعنی کھانے کے اور دکھانے کے اور۔ان خیالات کا اظہار میاں چنوں سیسابق لیگی ممبران قومی اسمبلی مجیدہ وائیں پیر اسلم بودلہ رانا بابر حسین ایم پی اے مہر عامر حیات ہراج سابق ایم پی اے غزالہ شاہین وائیں ضلعی صدر خواتین ونگ اور ضلعی ترجمان ن لیگ غلام شبیر ساقی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا لیگی رہنماوں نے قومی اسمبلی کے سامنے سینئر لیگی ممبران اسمبلی پر تحریک انصاف کے کارکنان کے حملے اور تشدد کو ملک کیامن کے خلاف گہری سازش اور شرمناک عمل قرار دیا۔لیگی رینماوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے کارکنان اپنے جھوٹے اور بہتان تراش لیڈر کے نقش قدم پر چلتے ہوئے بزرگوں اور خواتین کا احترام مکمل طور پر بھول چکے ہیں ضلعی ترجمان غلام شبیر ساقی نے کہا کہ ہمیں ہمارے قائد نے سیاست میں بر باری،برداشت اور تحمل کا درس دیا ہے ہم ایسا کوئی عمل یا بات نہیں کرینگے جس سے ہماری قیادت یا جماعت پر انگلی اٹھے لیکن یاد رہے کہ شرافت پسندی کا مطلب یہ نہیں کہ جھوٹ اور بد کردار لوگ ہمارے گریبان تک آ پہنچیں۔ اور ہم تنبیہ کرتے ہیں کہ سیاست میں جھوٹ کے بعد بدمعاشی کو فروغ نہ دیا جائے کیونکہ اخر ہمارے صبرکی بھی کوئی حد ہے۔لیگی رہنماوں نے بدمعاشوں کے جتھے کا ڈٹ کر مقابلہ کرنے پر شاہد حاقان عباسی۔احسن اقبال۔مصدق ملک کو حقیقی شیر قرار دیا اور خاتون رکن اسمبلی ترجمان ن لیگ مریم اورنگ زیب سے بد اخلاقی کو تحریک انصاف کا کلچر قرار دیا۔

ردعمل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -