کراچی، نواں سیرت سیمینار اور سالانہ تیسرا نعتیہ مشاعرہ 

کراچی، نواں سیرت سیمینار اور سالانہ تیسرا نعتیہ مشاعرہ 

  

 کراچی(اسٹاف رپورٹر)ریجنل دعوۃ سینٹر (سندھ) کراچی، دعوۃ اکیڈمی، بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی، اسلام آباد کے زیر اہتمام شاہ محی الحق فاروقی اکیڈمی کراچی کے اشتراک سے ایک روزہ سیرت سیمینار اور نعتیہ مشاعرہ منعقد کیا گیا۔ سیرت سیمینار کی صدارت ڈاکٹر جمیل بندھانی نے کی جب کہ مہمان خصوصی  نامور عالم دین پروفیسر ڈاکٹر عامر عبداللہ محمدی تھے۔ پروگرام کے پہلے سیشن میں مقررین نے سیرت طیبہ پر گفتگو کی۔ نامور عالم دین مولانا عبدالمنعم فائز نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نبی اکرم ؐ  قریش کے معزز تاجر خاندان میں پیدا ہوئے۔ آپؐ نے بچپن سے ہی تجارتی سفر کیے، انہوں نے کہا کہ آپؐنے دنیا کو اہم تجارتی اصول سکھائے، یہ وہ اصول ہیں، جنہیں اپنی مالی زندگی کا حصہ بناکر ہم مالی امور میں آسودگی اور برکت حاصل کرسکتے ہیں۔ سیرت سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے مہمان خصوصی نامور عالم دین اور داعی اتحاد بین المسلمین، ڈاکٹر عامر عبداللہ محمدی نے کہا کہ نبی اکرم ؐ  کا تعارف صداقت، دیانت  اور امانت ہے،  آج سیرت طیبہ کو عملی زندگی میں ڈھالنے کی ضرورت ہے، کیوں کہ سیرت طیبہ ا?ج ہمارے لیے فرض کا درجہ رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سیرت سیمینار کے ذریعے عوام کو یہ پیغام جانا چاہیے کہ آج کا مسلمان نبی اکرم ؐ کے اسوہ مبارک کی روشنی میں اپنی زندگی گزارنے کا عزم رکھتا ہے۔ پروگرام کے دوسرے سیشن میں نعتیہ مشاعرہ ہوا۔ نعتیہ مشاعرے میں نامور شعرائے کرام جناب قمر وارثی، آسی سلطانی، دلاور علی آزر، وقار سحر، عدنان عکس، مہتاب عالم مہتاب، راشد علی مرکھیانی، عبدالوحید تاج، ذوہب نازک، ڈاکٹر نور سہارنپوری اور حافظ محمد مزمل کمالی نے اپنا نعتیہ کلام پیش کیا۔آخر میں مہمانوں میں دعوۃ اکیڈمی کی جانب سے یادگاری شیلڈز تقسیم کی گئیں۔

مزید :

صفحہ آخر -