امریکی کمپنی برطانیہ میں ٹیکس چوری کرتے پکڑی گئی

امریکی کمپنی برطانیہ میں ٹیکس چوری کرتے پکڑی گئی
امریکی کمپنی برطانیہ میں ٹیکس چوری کرتے پکڑی گئی

  

لندن (بیورونیوز) امریکہ کی دوا ساز کمپنی ”فائزر“ اپنی ادویات اور دنیا کے ہر کونے میں پھیلے اپنے کاروبار کی وجہ سے مشہور ہے۔ لیکن حال ہی میں اس کی مشہوری اس کی منفی سرگرمیوں کی وجہ سے ہوئی ہے۔ فائزر کے متعلق معلوم ہوا ہے کہ یہ کمپنی آض کل نئی اور اچھی ادویات بنانے کی بجائے اس بات پر زیادہ توجہ دے رہی ہے کہ کیسے زیادہ سے زیادہ ٹیکس بچاکر زیادہ سے زیادہ مال بنایا جائے۔ برطانوی ادارے کمپنیز ہاﺅس کو جمع کرائی گئی دستاویزات سے پتا چلا ہے کہ اس کمپنی نے 2010ءسے لے کر 2012ءتک کے تین سالوں کے دوران برطانیہ میں حکومت کو جتنا ٹیکس دیا ہے اس سے تقریباً ساڑھے چھ کروڑ پاﺅنڈ زائد رقم واپس لی ہے۔ اس کمپنی نے برطانیہ میں تقریباً 12 کروڑ پاﺅنڈ ٹیکس دیا اور تقریباً ساڑھے اٹھارہ کروڑ پاﺅنڈ ٹیکس میں رعائتوں کی مد میں واپس لئے۔ کمپنی کو برطانیہ میں تقریباً 5 ارب پاﺅنڈ کمانے کے باوجود یہ رعائتیں دی گئی ہیں۔ یہ کمپنی اپنے ٹیکس کے معاملات اور کاروبار کئی ایسے ممالک میں منتقل کرچکی ہے کہ جہاں اسے کم ٹیکس دینا پڑے۔ آج کل برطانوی میڈیا فائزر کے خلاف سراپا احتجاج ہے کہ صحت جیسے شعبے کو بھی مکروہ دھندہ بنا دیا گیا ہے.

مزید : بزنس