”معاشرے میں عدم رجحان اور اس کی اصلاح“ کے موضوع پر بین الکلیاتی مذاکرہ

”معاشرے میں عدم رجحان اور اس کی اصلاح“ کے موضوع پر بین الکلیاتی مذاکرہ

 لاہور (پ ر) محکمہ اوقاف و مذہبی امور کے زیر اہتمام جامعہ ہجویریہ داتا دربار، اورینٹل کالج اور گورنمنٹ کالج یونیورسٹی کے باہمی اشتراک سے ”معاشرے میںعدم رجحان اور اس کی اصلاح ” کے موضوع پر بین الکلیاتی مذاکرہ ہوا ۔ مذاکرہ میں سیکرٹری اوقاف محمد ثاقب عزیر ، ڈین اورینٹل کالج ڈاکٹرعصمت اﷲ زاہد ، ڈایکٹر جنرل مذہبی امور محمد حسن رضوی ، محمد سلیم اﷲ اویسی اور قاری بدر الزمان پر نسپل جامعہ ہجویریہ کے علاوہ تین تعلیمی اداروں سے 40طالب علموں کو دعوت دی گئی تھی ۔نعیم انور نعمانی نے ماڈریٹر کے فرائض سرانجام دیئے ۔مذاکرہ میں اس بات پر اتفاق کیاگیا کہ اگر قرآن وسنت سے رہنمائی لیں ، خود احتسابی کریں ، صوفیائے کرام کے اخلاقی ضابطے کو اپنائیں تو معاشرے میں عدم توازن کو کم سے کم کیا جا سکتا ہے ۔ اگر ہم بات دلیل سے کریں ، حکومتی قوانین و ضوابطہ کا احترام کریں اور ریاست پر اعتماد کا اظہار کریں ، اختلائی معاملات کو ہوا نہ دیں تو اس سے معاشرہ میں عدم برداشت کے رجحان پر کافی حد تک قابو پایا جاسکتا ہے۔ اس کے علاوہ اگر مثبت اقدامات کئے جائیں تاکہ معاشرے سے ذہنی و علمی پس ماندگی ختم ہوسکے گی سیکرٹری اوقاف محمد ثاقب عزیز نے اختتامی کلمات میں کہا کہ آج کے مذاکرات کا مقصد عصری اور مذہبی جامعات کے درمیان موجود فاصلے اور خلیج کو کم کرنا تھا۔

 ، تینوں اداروں کے طلباءنے مختلف تناظر میں زیر بحث موضوع کی پیچیدگی کو سمجھنے اور بہتری کیلئے تجاویز دیں

مزید : میٹروپولیٹن 4