عمران خان کے احتجاج کا ایجنڈا دھاندلی نہیں کچھ اور ہے، فضل الرحمن

عمران خان کے احتجاج کا ایجنڈا دھاندلی نہیں کچھ اور ہے، فضل الرحمن

                                       ملتان( آن لائن +اے این این ) جمعیت علماءاسلام(ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہاہے کہ عمران خان کے احتجاج کا ایجنڈا دھاندلی نہیں کچھ اور رہا ہے ، خیبرپختونخوا کے کتنے حلقوں میں دھاندلی ہوئی مگر اس کی تو کوئی بات نہیں کررہا، حکومت سے کچھ شکایات ضرورہیں مگر اقتصادی حوالے سے کچھ بہتری سے انکارنہیں کیاجاسکتا، خارجہ پالیسی پر نظرثانی کرنی چاہیے۔بدھ کویہاں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے مولانافضل الرحمان نے کہا کہ افغانستان میں بین الاقوامی قوتوں کی موجودگی پورے خطے کیلئے خطرہ ہے اس خطرے سے خطے کے مستقبل کو بچا نا ایک بڑا چیلنج ہے ہمیں اپنی خارجہ پالیسی پر نظرثانی کرنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے اندر سکیورٹی کا مسئلہ ہے، کراچی، بلوچستان، فاٹا میں کی موجودہ صورتحال سے ملکی معیشت بری طرح متاثر ہورہی ہے لوگ خود کو غیر محفوظ تصور کررہے ہیں، سرمایہ کار سرمایہ کاری کرنے کیلئے تیار نہیں حکومت کو ان تمام مسائل کو سنجیدگی سے حل کرناہوگا۔ انہوں نے کہا کہ کوئی شک نہیں کہ ہمیں حکومت سے کچھ شکایات ہیں لیکن ایک سال کے بعد اقتصادی لحاظ سے کچھ آگے بڑھنے کے اشارے ملے ہیں اس سے ہمیں انکار نہیں کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہاکہ ہماری معیشت اس وقت تک مکمل طورپربحران سے نہیں نکل سکتی جب تک ہم ملک کو آئی ایم ایف سے بے نیاز نہیں کرینگے۔جب عالمی مالیاتی ادارے کے سامنے ہاتھ پھیلائیں گے اورآئی ایم ایف اور ورلڈ بینک ہمارے فیصلے کرینگے تو ہم عوام کومستحکم معاشی نظام نہیں دے سکتے۔ انہوں نے کہاکہ سوویت یونین کا خاتمہ ہوچکا ہے اور اس وقت ایک سرمایہ دارانہ نظام اپنے پنجے مضبوط کررہا ہے اس پر عالمی قوتوں کو ازسرنوکردار ادا کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں روز بروز بدامنی بڑھ رہی ہے۔ عمران خان روز بروز یوٹرن لیتے ہیں، عمران خان کو آج دھاندلی یاد آئی ہے ۔ خیبرپختونخواہ میں کتنے حلقے ہیں جن میں دھاندلی ہوئی وہاں تو کوئی بات نہیں کی جارہی۔ عمران خان کے احتجاج کا ایجنڈا دھاندلی نہیں کچھ اور لگ رہا ہے ۔

مزید : صفحہ اول