,شہرت کے لئے اپنا ہی بچہ ’قتل‘ کر دیا

,شہرت کے لئے اپنا ہی بچہ ’قتل‘ کر دیا

بوسٹن (بیورورپورٹ) دنیا کی بڑھتی ہوئی آبادی ایک خوفناک عذاب کی صورت اختیار کرتی جارہی ہے اور اس مسئلہ کے مختلف حل ہمیشہ سے وجہ تنازع بنے رہے ہیں۔ حمل ضائع کرنے کا عمل یعنی ”ابارشن“ اس سلسلہ میں متنازع ترین اعمال میں سے ایک ہے۔ مذہبی اور روایت پسند حلقے اسے انسانی جان کا قتل سمجھتے ہیں جبکہ اس کے حامی اسے عین جائز سمجھتے ہیں۔ امریکہ میں ایک 25 سالہ خاتون جو کہ اسقاط حمل کے متعلق مشاورت فراہم کرتی ہیں، نے اپنے اسقاط حمل کے آپریشن کی ویڈیو انٹرنیٹ پر بھیج کر ایک نیا طوفان کھڑا کردیا ہے۔ تین منٹ کی اس ویڈیو میں ایملی لیٹس نامی اس خاتون کے آپریشن کرواتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ اس کا ویڈیو کو عام کرنے کا مقصد یہ پیغام دینا ہے کہ اسقاط حمل کا عمل ہرگز کوئی منفی عمل نہیں ہے اور یہ کہ اس عمل کے عورتوں کے مفاد میں ہونے کی وجہ سے معاشرے میں اسے قبول کیا جانا چاہیے۔ کاسموپولیٹن نامی میگزین میں لکھے گئے اپنے مضمون میں ایملی نے کہا کہ وہ یہ دکھانا چاہتی تھی کہ اس عمل میں خوفزدہ نہیں ہونا چاہیے، یہ ایک مثبت عمل ہے۔

مزید : صفحہ آخر