پنجاب حکومت کی طرف سے خیبرپختونخواہ چڑیا گھر کیلئے بھجوائے گئے پرندے, جانور وزیراعلیٰ کے گھر کی زینت بن گئے

پنجاب حکومت کی طرف سے خیبرپختونخواہ چڑیا گھر کیلئے بھجوائے گئے پرندے, جانور ...
پنجاب حکومت کی طرف سے خیبرپختونخواہ چڑیا گھر کیلئے بھجوائے گئے پرندے, جانور وزیراعلیٰ کے گھر کی زینت بن گئے

  

پشاور (نمائندہ خصوصی ) پنجاب حکومت کی طرف سے پشاور میں جدید چڑیا گھر کے قیام کے لئے تحفتاً بھجوائے گئے بھاری مالیت کے نایاب پرندے اور جانور سابق وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا کے گھر بھجوائے جانے کے بعد صوبائی حکومت نے چڑیا گھر کا منصوبہ ختم کردیا ہے اور اس حوالے سے بجٹ میں مختص کردہ رقم دوسرے شعبوں میں خرچ کی جانے لگی ہے۔ خیبر پختونخوا کے سرکاری ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ خیبر پختونخوا میں اے این پی کے دور حکومت میں ایک جدید طرز کا چڑیا گھر بنانے کا منصوبہ ترتیب دیا گیا اور اس مقصد کے لئے حیات آباد میں شلمان پارک میں جگہ بھی مختص کردی گئی۔ 22کروڑ روپے کی لاگت سے چڑیا گھر میں مختلف پنجرے اور عمارتیں وغیرہ تعمیر کرنے کا فیصلہ ہوا، پشاور گورنمنٹ اتھارٹی نے نایاب جانوروں اور پرندوں کے لئے پنجاب وائلڈ لائف ڈیپارٹمنٹ سے رابطہ کیا لیکن پنجاب کے محکمہ جنگلی حیات نے پرندے دینے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ یہ جانور اور پرندے صرف اسی صورت مل سکتے ہیں جب خیبر کے وزیراعلیٰ براہ راست وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف سے رابطہ کریں۔ گورنمنٹ ٹو گورنمنٹ رابطے کے بعد حکومت پنجاب نے ہرن اور طوطوں سمیت کروڑوں روپے مالیت کے جانور اور پرندے خیبر حکومت کے حوالے کئے جس کے بارے میں سرکاری ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ پرندے اے این پی حکومت ختم ہونے سے پہلے ہی سابق وزیراعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی کے گھر منتقل کردئیے گئے جبکہ بیشتر مختلف اہم شخصیات کو تحفے میں دے دئیے گئے۔ جس کے بعد منصوبہ کھٹائی میں پڑ گیا اور موجودہ حکومت نے گزشتہ دنوں چڑیا گھر منصوبہ عملاً ختم کردیا۔ خیبر پختونخوا کے سیاسی، سماجی و شہری حلقوں نے اس منصوبے کے خاتمے پر گہری تشویش ظاہر کی ہے اور مطالبہ کیا ہے کہ ذمہ داروں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے۔ اس حوالے سے ملنے والی تفصیلات کے مطابق پنجاب وائلڈ لائف ڈیپارٹمنٹ نے پشاور چڑیا گھر کے لئے 2شیر، 6ہرن، 1 ہاتھی، 2بارہ سنگے، 20 بندر، 24خرگوش، 112را طوطے، 48 کالے تیتر، 88کبوتر نایاب نسل، 240 مختلف رنگوں کی چڑیا سمیت کئی نایاب و قیمتی جانور اور پرندے بھی لائے گئے جو کہ منصوبہ ختم ہونے سے پہلے ہی گزشتہ دور حکومت میں سابق وزیر اعلیٰ خیبر کی رہائش گاہ پر پہنچا دئیے گئے۔ جس کے بعد موجودہ صوبائی حکومت نے پشاور میں جدید طرز کے چڑیا گھر کا منصوبہ ختم کردیا اور بتایا گیا ہے کہ نئے صوبائی بجٹ میں اس مد میں کوئی رقم مخصوص نہیں کی جائے گی۔

مزید : پشاور /اہم خبریں