جامعہ نظامیہ رضویہ میں طلباء کی فراغت کے موقع پر ختم بخاری کی تقریب

جامعہ نظامیہ رضویہ میں طلباء کی فراغت کے موقع پر ختم بخاری کی تقریب

 لاہور ( وقائع نگار)جامعہ نظامیہ رضویہ اندرون لوہاری گیٹ میں گذشتہ روز دورہ دیث کے 236 طلباء کی فراغت کے موقع پر ختم بخاری شریف کی تقریب منعقد ہوئی جس میں ڈائریکٹر جنرل مذہبی امور محکمہ اوقاف پنجاب سید طاہر رضا بخاری ، مولانا منیر احمد یوسفی ، مولانا غلام محمد سیالوی ، مولانا مفتی گل احمد خان عتیقی ، مفتی محمد خان قادری ، مفتی محمد صدیق ہزاروی ، قاری محمد عارف سیالوی ، علامہ غلام نصیرالدین چشتی ، مفتی محمد رمضان سیالوی ، مفتی محمد اقبال چشتی ، علامہ عرفان حفیظ عطاری ، قاری محمد زوار بہادر ، مفتی ظہور احمد جلالی سمیت اہل علاقہ اور مدرسہ کے طلباء نے کثیر تعداد میں شرکت کی ۔ تقریب کے اختتام پرجامعہ نظامیہ رضویہ اندرون لوہاری گیٹ کے مہتمم اور تنظیم المدارس اہلسنت پاکستان کے ناظم اعلیٰ صاحبزادہ محمد عبدالمصطفیٰ ہزاروی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملک بھر میں معروف اورنمایاں مقام رکھنے والی اہلسنت والجماعت کی عظیم دینی درسگاہ جامعہ نظامیہ رضویہ لاہور کا آغاز 1956 ء میں باغیچی نہال چند اندرون لوہاری دروازہ میں ہوا اس کی نئی عمارت کا سنگ بنیاد 1972 ء میں رکھا گیا ۔               جامعہ نظامیہ رضویہ کی صورت میں علم کا یہ پودا علم و عمل کے عظیم پیکر حضرت محدث اعظم پاکستان علامہ ابوالفضل محمد سردار ؒ کے دست مبارک سے لگایا گیا ان کے شاگرد استاذالعلماء شیخ الحدیث علامہ غلام رسول رضوی نے 1962 ء تک اس کی نگرانی اور آبیاری کی اور پھر ذہین اور محنتی تلمیذ استاذ العلماء حضرت علامہ مفتی محمد عبدالقیوم ہزاروی نے 2003 ء تک نہ صرف اس ادارے کو ترقی و عروج کی منازل سے آشنا کیا بلکہ جامعہ نظامیہ رضویہ شیخوپورہ کی فلک بوس عمارتوں کی صورت میں امت مسلمہ کو مذدہ جانفرا بھی سنایا ۔اس وقت جامعہ نظامیہ رضویہ لاہورمیں1200کے قریب طلباء درسِ نظامی، تجویدوقرأت اورحفظ قرآن کی دولت سے مالامال ہورہے ہیں اوران طلباء کودورِجدیدکے تقاضوں کے مطابق عصری علوم اور کمپیوٹرسائنسزکی تعلیم بھی دی جاتی ہے ۔جامعہ میں علم کافیضان جاری کرنے والے خوش قسمت اساتذہ کی تعداد30ہے جوجامعہ میں علم کی شمع روشن کررہے ہیں۔ جامعہ نظامیہ رضویہ تقریبا3کنال پرمشتمل ہے ۔اس وقت 70کمروں کواپنے جلومیں لئے ہوئے ہے ۔جبکہ 5وسیع وعریض ہال جامعہ کی زینت ہیں۔جن میں سے ایک درس حدیث،ایک تحفیظ القرآن،ایک مطعم اوردورہائش کے لئے مختص ہیں ۔علاوہ ازیں پانچ اساتذہ کی رہائش گاہیں بھی جامعہ میں واقع ہیں ۔لائبریری ہال اورکمپوٹرلیب اس کے علاوہ ہے ۔ جامعہ کے ساتھ حال ہی میں 45کمروں پر مشتمل 5 منزلہ عمارت خریدی گئی ہے جو آئندہ تعلیمی سال میں باقاعدہ زیراستعمال ہوگی۔ جامعہ میں دین کے علاوہ دنیاوی تعلیم سے بھی آراستہ کیا جاتا ہے جن میں ایم اے تک کلاسز بھی لگتی ہیں۔ جامعہ کے قیام سے آج تک ہزاروں فارغ التحصیل طلباء نہ صرف پاکستان بلکہ بیلجیم، برطانیہ ، امریکہ ، دبئی ، جرمنی ، ساؤتھ افریقہ سمیت دنیا کے کونے کونے میں اسلام کی ترویج اور شخصیات کی تعمیر کر رہے ہیں ۔ جامعہ میں کمپیوٹرلیب قائم کیاگیاہے جہاں طلباء کوکمپیوٹرسائنسزکی تعلیم دی جاتی ہے جس میں6عددکمپوٹرموجودہیں۔ طلباء کے لئے لائبریری بھی ہے جس میں تقریبا30000کتب جدیدوقدیم ومخطوطات شامل ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4