احسن اقبال پر قاتلانہ حملے کا مقدمہ درج ،تحقیقات کیلئے جے آئی ٹی قائم

احسن اقبال پر قاتلانہ حملے کا مقدمہ درج ،تحقیقات کیلئے جے آئی ٹی قائم

  

نارووال،لاہور(نمائندہ خصوصی، مانیٹرنگ ڈیسک)وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال پر قاتلانہ حملے کی تحقیقات کیلئے جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم تشکیل دیدی گئی ۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نارووال کی سفارش پر پانچ رکنی جے آئی ٹی تشکیل دی گئی ۔ایڈیشنل آئی جی ویلفیئر اینڈ فنانس محمد طاہر کنوینر ہوں گے جبکہ دیگر ممبران میں ایس ایس پی گوجرانوالہ خالد بشیر چیمہ ،ایس پی انسداد دہشتگردی گوجرانوالہ ریجن فیصل گلزار اعوان شامل ہیں۔جے آئی ٹی میں آئی ایس آئی اور آئی بی کا ایک ایک نمائندہ بھی شامل ہو گا۔ سیکرٹری ہوم میجر (ر) اعظم سلیمان نے نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے۔ مزید بتایا گیا ہے کہ پولیس نے احسن اقبال کے جلسے کے منتظم گلفام کو بھی جلسے سے پہلے پولیس کو اطلاع نہ دینے پر حراست میں لیا ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ جلسے سے متعلق پولیس اور اسپیشل برانچ لاعلم تھی، جائے وقوعہ پر موجود تمام پولیس اہلکاروں کو ڈی پی او نے طلب کرلیا۔ دوسری طرف ڈپٹی کمشنرنارووال نے وزیرداخلہ پرحملے کی ابتدائی رپورٹ چیف سیکرٹری کوبھجوادی۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ وزیرداخلہ احسن اقبال کی کنجروڑ میں کارنر میٹنگ شام 6 بجے ختم ہوئی جس کے بعد رش کافائدہ اٹھاتے ہوئے ملزم عابد حسین نے احسن اقبال پر فائرنگ کی۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ حملے میں 30بورکاپستول استعمال کیاگیا تھا ٗایلیٹ فورس نے بروقت کارروائی کرکے عابد کوگرفتار کر لیا۔عابد حسین کا تعلق گاؤں میرم تحصیل شکر گڑھ سے ہے،حملہ آورکی موٹرسائیکل کوبھی تحویل میں لے لیاگیا۔ وزیر داخلہ احسن اقبال پر حملے کا مقدمہ تھانہ شاہ غریب میں درج کرلیا گیاجس میں قاتلانہ حملے اور دہشتگردی کی دفعات شامل کی گئی ہیں مقدمہ نمبر 73/18 تھانہ شاہ غریب میں درج کرلیا گیا ہے۔مقدمہ اے ایس آئی محمد اسحاق کی مدعیت میں درج کیا گیا وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی ہدایت پر وزیر داخلہ احسن اقبال کی صحت کا جائزہ لینے اور علاج معالجے کیلئے میڈیکل بورڈ تشکیل دیدیا گیا ۔ میڈیکل بورڈ پروفیسر ڈاکٹر محمود ایاز کی سربراہی میں تشکیل دیا گیا ہے جس کے دیگر ممبران میں پروفیسر ڈاکٹر وارث فاروق ، پروفیسر ڈاکٹر رانا ارشد اور پروفیسر ڈاکٹر علی رضا ہاشمی شامل ہیں۔ میڈیکل بورڈ نے آپریشن کے بعد احسن اقبال کی صحت کا تفصیل سے جائزہ لیا ہے ۔

جے آئی ٹی

مزید :

صفحہ اول -