بے نظیر قتل کیس ، ہائیکورٹ نے نظر بند پانچوں ملزموں کی رہائی کا حکم دے دیا

بے نظیر قتل کیس ، ہائیکورٹ نے نظر بند پانچوں ملزموں کی رہائی کا حکم دے دیا

  

راولپنڈی(آن لائن)عدالت عالیہ راولپنڈی بنچ کے جسٹس مرزا وقاص رؤف اور جسٹس سرفراز ڈوگر پر مشتمل ڈویژن بنچ نے سابق وزیر اعظم بے نظیربھٹو قتل کیس میں بری ہو کر حکومتی احکامات کے تحت نظر بند پانچوں ملزموں کی رہائی کا حکم جاری کر دیا ہے عدالت نے پانچوں ملزموں کی ضمانت 5لاکھ روپے فی کس کے مچلکوں پر منظور کرتے ہوئے تمام ملزموں کو اپیلوں کے فیصلے تک ہر تاریخ پرعدالت میں حاضری یقینی بنانے کا بھی حکم دیا عدالت نے ملزموں کی رہائی کے خلاف ایف آئی اے کی اپیلیں باقاعدہ سماعت کے لئے منظور کر لی ہیں، انسداد دہشت گردی راولپنڈی کی خصوصی عدالت نمبر1کے جج اصغر خان نے سابق وزیر اعظم بے نظیر بھٹواور پیپلز پارٹی کے23کارکنوں کے قتل کیس میں نامزد محمد رفاقت ،حسنین گل ،شیر زمان ،رشید احمد اور اعتزاز شاہ پر مشتمل پانچوں ملزموں کوگزشتہ سال 31اگست کو سنائے جانے والے عدم ثبوت کی بنا پر بری کر دیا تھالیکن اسی روز ڈپٹی کمشنر راولپنڈی نے نقص امن کے خطرے کے پیش نظرپانچوں ملزموں کی30یوم کی نظر بندی کے احکامات جاری کرتے ہوئے ان کی رہائی روک دی نظر بندی کی مدت ختم ہونے سے قبل ہی ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب میجر (ریٹائرڈ)اعظم سلیمان نے مذکورہ ملزموں کی نظر بندی میں 2ماہ کی توسیع کے احکامات جاری کئے تھے جس کے بعد پہلے ریویو کورٹ اور پھر ایپلٹ کورٹ نے ملزموں کی مزید2,2ماہ کی نظر بندی کے احکامات جاری کئے۔ 31اگست کے بعد سے ملزم بری ہونے کے باوجود نظر بند رہے اس دوران ملزموں نے عدالت عالیہ میں اپیلیں دائر کی تھیں۔

مزید :

صفحہ آخر -