کوہاٹ میں شکردرہ تا بوڑی سڑک 4 سالوں میں مکمل نہ ہوسکی

کوہاٹ میں شکردرہ تا بوڑی سڑک 4 سالوں میں مکمل نہ ہوسکی

  

کوہاٹ(بیورو رپورٹ) 1 کروڑ کی لاگت سے بننے والی شکردرہ تا بوڑی ساغری سڑک چار سالوں میں بھی مکمل نہ ہو سکی ٹی ایم اے لاچی مذکورہ منصوبے میں تاخیر کی ذمہ دار منصوبہ اب سی اینڈ ڈبلیو کے حوالے کر دیا گیا تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیر قانون امتیاز شاہد قریشی نے الیکشن میں کامیابی کے بعد بوڑی ساغری کے عمائدین کے مطالبے پر شکردرہ سے بوڑی ساغری تک سڑک کی تعمیر کے لیے ایک کروڑ کا فنڈ مختص کرتے ہوئے منصوبہ ٹی ایم اے لاچی کے حوالے کر دیا مگر کئی سالوں تک اس منصوبے پر کام کا آغاز نہ ہو سکا اور بہترین عوامی فلاحی منصوبہ جس کے لیے وزیر قانون نے فنڈ بھی فراہم کر دیئے تھے ان کی بدنامی کا باعث بننے لگا جس پر انہوں نے مذکورہ منصوبہ ٹی ایم اے لاچی سے واپس لے کر سی اینڈ ڈبلیو کوھاٹ کے حوالے کر دیا مگر افسوس کہ چار سال گزرنے کے باوجود یہ منصوبہ تاحال سو فیصد مکمل نہ ہو سکا اور عوام کو پہلے کی طرح آمدورفت میں تکلیف اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے علاقہ مکینوں نے وزیر قانون امتیاز شاہد قریشی اور ڈپٹی کمشنر کوھاٹ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ سی اینڈ ڈبلیو کے افسران کو ہدایت کریں کہ سڑک کی تعمیر کی رفتار تیز کریں تاکہ عوام کو سہولت میسر ہو سکے علاقہ مکینوں نے اسسٹنٹ ڈائریکٹر اینٹی کرپشن سید عنایت علی شاہ سے بھی مطالبہ کیا ہے کہ وہ مذکورہ منصوبے میں تاخیر کا باعث بننے والی ٹی ایم اے لاچی کے افسران سے بھی باز پرس کریں کہ انہوں نے کام کیوں نہیں شروع کیا اور جس ٹھیکیدار نے ٹھیکہ لیا تھا اس کو کام نہ کرنے پر کتنا جرمانہ کیا گیا ہے اور جرمانے کی یہ رقم کہاں گیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -