حکومت فاٹا کے انضمام میں سنجیدہ نہیں ہے،شاہ محمو دقریشی

حکومت فاٹا کے انضمام میں سنجیدہ نہیں ہے،شاہ محمو دقریشی

  

ملتان ( نیوز رپورٹر) پاکستان تحریک انصاف کے وائس چیئرمین مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ حکومت فاٹا کے انضمام کیلئے سنجیدہ نہیں ۔ حکومت کے خاتمہ سے 24 دن قبل فاٹا کیلئے وزیراعظم کا پارلیمانی لیڈروں کا اجلاس طلب کرنا سیاسی شعبدہ بازی کے سوا کچھ نہیں۔ فاٹا کے انضمام کیلئے بنائی گئی کمیٹی کی(بقیہ نمبر25صفحہ12پر )

سفارشات پر گزشتہ ڈیڑھ سال سے عملدرآمد نہیں ہوا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز اسلام آباد میں وزیراعظم ہاؤس میں فاٹا کے حوالے سے طلب شدہ پارلیمانی لیڈروں کے اجلاس میں شمولیت سے قبل پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ اجلاس میں شمولیت سے قبل تمام حقائق عوام کے سامنے رکھ رہے ہیں۔ وزیراعظم ہاؤس میں بھی یہی موقف پیش کرونگا۔ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی فیڈریشن کی مضبوطی چاہتی ہے۔ فاٹا کے خیبر پختونخواکے ساتھ انضمام سے فیڈریشن مضبوط اور فاٹا کے عوام خوشحال ہوں گے۔ 11مئی کو عمران خان شمالی وزیرستان میں ایک بہت بڑے جلسہ عام سے خطاب کریں گے۔ جس میں وہ فاٹا کے خیبر پختونخواسے انضمام کے حوالے سے پی ٹی آئی کے آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا حکومت 5پانچ سالو ں میں ملک کا کوئی مسئلہ بھی حل نہیں کرسکی۔ عوام کو ریلیف دینے میں مکمل طور پر ناکام رہی۔ نیشنل ایکشن پلان پر ساری جماعتوں نے اتفاق کیا۔ وزیراعظم نے نیشنل ایکشن پر کئی دفعہ اجلاس طلب کئے مگر کسی بھی سفارشات پر آج تک عملدرآمد نہ ہوسکا۔ جس کا نتیجہ قوم آج بھی بھگت رہی ہے۔ نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمدکے معاملے پر اجلاس میں آواز بلند کرونگا۔مخدوم شاہ محمودقریشی نے کہا ہے کہ میں احسن اقبال پر حملہ کی پر زور مذمت کرتا ہوں۔ سیاسی اختلافات اپنی جگہ مگر یہ کیسی سیاست ہے جس میں کسی کی جان چلی جائے انتہا پسندی اور عدم برداشت ہمارے معاشرہ کیلئے ناسور ہے۔ تمام سیاسی جماعتوں کو ایسے واقعات کی مذمت کرنی چاہیے اور ایسے واقعات کی بیغ کنی کرنی چاہئے۔

شاہ محمود

مزید :

ملتان صفحہ آخر -