نوید الحق ارائیں کا خفیہ آپریشن ،سابقہ تاریخوں میں ڈی پی سی ترقیاں کا لعدم قرار

نوید الحق ارائیں کا خفیہ آپریشن ،سابقہ تاریخوں میں ڈی پی سی ترقیاں کا لعدم ...

ملتان(سپیشل رپورٹر) سابق میئر ملتان نویدالحق آرائیں نے سابقہ تاریخوں میں ڈی پی سی کے تحت ہونے والی ترقیوں کوکالعدم قرار دے دیا ہے اور دسمبر 2018میں ہونے والی ڈی پی سی کے تحت ہونے والی ترقیوں کو غیر قانونی قرار دے دیا ہے، بتایا گیا ہے کہ دسمبر 2018میں میونسپل کارپوریشن اور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کے مختلف کیڈرز کیلئے ڈیپارٹمنٹل پروموشن کمیٹی کا اجلاس ہوا تھا جس میں مختلف کیڈرز کے 64ملازمین کو ترقیاں دی گئی تھیں، سابق میئر ملتان نویدالحق آرائیں کی جانب سے سابقہ تاریخوں میں جاری احکامات کے مطابق کمیٹی نے میرٹ کے مطابق سنیارٹی لسٹ نہیں بنائی، ملازمین کی سیٹوں کےمطابق ایڈجسٹمنٹ (بقیہ نمبر11صفحہ12پر )

نہیں کی گئی ہے، ڈپٹی کمشنر ملتان کے احکامات کو مدنظر نہیں رکھا گیا ہے، سابق میئر ملتان کی جانب سے جاری ہونے والے منسوخی آرڈرز کےمطابق 47ایسے کیڈرز کو ترقیاں دی گءہیں جن کو حکومت پنجاب نے ڈائنگ کیڈر میں شامل کررکھا ہے۔ سابق میئر ملتان نے ڈی پی سی کو کالعدم قرار دےدیا ہے اور دسمبر 2018میں ہونے والی ڈی پی سی کے تحت ہونے والی ترقیوں کو غیر قانونی قرار دے دیا ہے۔ جبکہ میونسپل کارپوریشن اور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی میں ڈی پی سی کالعدم قرار دیئے جانے پر ملازمین میں خوشی و غم کا سماں رہا، ڈی پی سی میں ترقی پانے والے کالعدم ہونے سے غم زدہ جبکہ ترقی کے خواہشمند ملازمین نے ڈی پی سی منسوخ ہونے پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ میونسپل کارپوریشن اور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی میں متعدد ملازمین ترقی پاکر مختلف سیٹوں پر تعینات ہوئے جبکہ ان سیٹوں پرموجود پہلے سے براجمان ملازمین کو سیٹیں چھوڑنا پڑیں تھیں۔ سیٹیں چھوڑنے والے ملازمین نے ڈی پی سی کالعدم ہونے پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ رشوت دیکر ترقی پانے والے ملازمین نے آفیسران سے پیسے واپس مانگنا شروع کردیئے ہیں۔ 

مزید : ملتان صفحہ آخر