حکمران باہر کی دنیا کی بجائے اپنی قوم پر اعتماد کریں، سراج الحق

حکمران باہر کی دنیا کی بجائے اپنی قوم پر اعتماد کریں، سراج الحق

لاہور)خصوصی رپورٹ)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ حکمران باہر کی دنیا کی بجائے اپنی قوم پر اعتماد کریں۔آئی ایم ایف کا یہاں آکر بیٹھنا ،خود نگرانی اور فیصلے کرنا، ہمیں ڈکٹیٹ کرنا اس بات کی علامت ہے کہ ہم بغیر جنگ کے اپنی آزادی سے دستبردار ہورہے ہیں۔ آزادی کے 73سال بعد آئی ایم ایف کی شکل میں ہمیں ایسٹ اینڈیا کمپنی کی طرف دھکیلا جارہا ہے۔آئی ایم ایف کے لوگوں کو قوم کے کندھوں پر سوار کرنے سے ہماری آزادی اور خود مختاری کو خطرہ ہے۔پاکستان کے مستقبل کو خطرہ ہے۔اگر ترقی کرنی ہے تو ملک میں جمہوریت کو عام کریں۔جمہوریت کے لبادے میں آمریت کی طرف جانا پاکستان کے لیے شدید خطرات پیدا کرے گا۔حکومت کے خلاف بیا ن دینے پر مولانا فضل الرحمن سے چھینی گئی سیکورٹی واپس کی جائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے سینیٹ میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔سینیٹر سرا ج الحق نے کہا کہ حکومت نے معیشت میں بہتری کے لیے اپوزیشن سے مشاورت کی اور نہ ملک میں موجود ماہرین معاشیات پر اعتماد کیا۔حکومت کا پورے کا پورا انحصار آئی ایم ایف پر ہے۔آئی ایم ایف اس سے پہلے کئی ملکوں کی معیشت کا بیڑہ غرق کرچکی ہے۔حکومت نے اب آئی ایم ایف کو پاکستان میں بٹھا دیا ہے۔پہلے ملکی ماہرین آئی ایم ایف کے ساتھ مذکرات کرتے تھے اب آئی ایم ایف ،آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات کرے گا۔ہرطرف آئی ایم ایف ہے۔پاکستانی قوم او ر پاکستان کہیں نظر نہیں آتا۔انہوں نے سوال کیا کہ ہم بیٹھ کر صرف تماشا دیکھتے رہیں گے۔جس طر ح پراسرار طریقے سے معین قریشی آئے تھے اور آتے ہی پاکستانی روپے کی قدر کم کی تھی اسی طرح رضا باقر پر اسرار طریقے سے آئے ہیں اور آتے ہی انہیں غیر قانونی اور غیر آئینی طریقے سے اسٹیٹ بینک کا چیئر مین لگا دیا گیا ہے۔آئی ایم ایف کے آنے کے بعد ہمار ا سی پیک ،ہماری معیشت اور ملک خطرے سے دوچار ہوگیا ہے۔

سراج الحق

مزید : صفحہ آخر