بھارت کشمیر میں آگ سے کھیل رہا ہے جلد خود بھی لپیٹ میں آئیگا: ڈیجیٹل کانفرنس

بھارت کشمیر میں آگ سے کھیل رہا ہے جلد خود بھی لپیٹ میں آئیگا: ڈیجیٹل کانفرنس

  

اسلام آباد،نیویارک(آئی این پی) کشمیر سالیڈیرٹی کونسل کے زیراہتمام مقبوضہ کشمیرمیں بھارت کی جانب سے لگائے گئے کرفیواور کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے 9 ماہ مکمل ہونے پر ایک روزہ آن لائن ڈیجیٹل کانفرنس کا انعقاد کیا گیا،جس سے وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد،کشمیر سالیڈیرٹی کونسل کے چیئرمین جاوید راٹھور،پیپلز پارٹی آزاد کشمیر کے صدرچوہدری لطیف اکبر،ڈاکٹر غلام نبی فائی سمیت پاکستان،آزادکشمیراور بیرون ممالک سے100سے زائد رہنماوں نے شرکت کی۔کشمیریکجہتی کونسل روس کے صدر سید اشتیاق ہمدانی نے کہا کہ کشمیر ی 9 ماہ سے لاک ڈاؤن اور کرفیو کا سامنا کررہے ہیں۔وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہا کہ کشمیر ہماری شہ رگ ہے اور اپنی شہ رگ کو کوئی بھی کسی کے حوالے نہیں کر سکتا،میں بھارت کو اس کانفرنس کے ذریعے واضح پیغام دینا چاہتا ہوں کہ وہ اپنی ہٹ دھرمی کو ختم کرے اور کشمیریوں پر ظلم وستم کرنا چھوڑ دے اس سے اسکو بہت نقصان ہونے والا ہے۔ آج کل پاکستان اور آزاد کشمیر کے لوگ ایک مہینہ بھی لاک ڈاون برداشت نہیں کر سکے جبکہ مقبوضہ کشمیر میں 9 ماہ سے کرفیو لگا ہوا ہے۔بھارتی حکومت نے دہلی میں بھی اقلیتوں پر ظلم کے پہاڑ توڑ دئیے ہیں۔بھارت کشمیر میں آگ سے کھیل رہا ہے اور وہ خود بھی اس آگ کی لپیٹ میں آ کر راکھ ہو سکتا ہے۔کشمیر یکجہتی کونسل کے چیئرمین جاوید راٹھور نے کہا کہ بھارت کرونا لاک ڈاون کی آڑ میں کشمیر کی تحریک کو کچلنا چاہتا ہے اور کشمیر کو ہڑپ کرنا چاہتا ہے اس لئے ہم سب کا یہ فرض ک ہم سب مل کر کشمیر کو بھارت کے چنگل سے آزاد کروانے کے لیے ایک مربوط حکمت عملی کے ساتھ عملی اقدامات اٹھائیں۔ لطیف اکبر نے کہا ہے کہ پاکستان میں ایسے لوگوں کو کشمیر کمیٹی کا چیئرمین بنایا جاتا ہے جن کو کشمیر کے بارے میں کچھ پتا ہی نہیں ہوتا ہے۔مسلم لیگ (ن) اور پی ٹی آئی حکو مت نے ایسے لوگوں کو لگایا۔میں نے سابق چیئرمین کشمیر کمیٹی فخر امام سے ملاقات کی توان نے مجھے بتایا کہ میں ابھی کشمیر پر مطالعہ کر رہا ہوں جب تک ان کا مطالعہ مکمل ہوا ہی تھا کہ ان کو اس عہدے سے ہٹا دیا گیا۔

ڈیجیٹل کانفرنس

مزید :

صفحہ اول -