شاہ محمود، احمد نصیر محمد الصباح رابطہ، پاکستان، کویت کورونا وباء چیلنج سے ملکر نمٹنے پر متفق

    شاہ محمود، احمد نصیر محمد الصباح رابطہ، پاکستان، کویت کورونا وباء چیلنج ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، نیوز ایجنسیاں) وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے اپنے کویتی ہم منصب ڈاکٹر احمد نصیر ال محمد الصباح سے وڈیو لنک کے ذریعے رابطہ کیا،دونوں وزرائے خارجہ کے مابین اس وبائی چیلنج سے نمٹنے اور اہم دو طرفہ امور پر پیش رفت کا جائزہ لینے کیلئے، ہر ماہ دو مرتبہ مشاورتی رابطے پر اتفاق کیا گیا،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا مسلسل لاک ڈاؤن اور بلا جو از پابندیوں کے سبب مقبوضہ جموں و کشمیر میں کرونا وبا کے پھیلاؤ کا خدشہ مزید بڑھ چکا ہے، بھارت سرکار اپنی ہندتوا سوچ کے تحت، بھارتی مسلمانوں کو کرونا وائرس کے پھیلاؤ کا ذمہ دار قرار دے کر مذہبی منافرت کو ہوا دے رہی ہے۔ عالمی برادری کو فوری طور پر اس بھارتی رویے کا نوٹس لینا چاہئے جبکہ کویتی وزیر خارجہ نے واضح کیا کہ ہندوستان میں جاری اسلاموفوبیا اور مسلمانوں کیساتھ ناروا سلوک کی روک تھام کیلئے کویتی کونسل آف منسٹرز نے او آئی سی سے موثر کردار ادا کرنے کا مطالبہ کیا ہے،کویت کے وزیر خارجہ نے پاکستان اور کویت کے مابین معاشی، دفاعی اور عسکری شعبوں میں تعاون کے فروغ کیلئے، 5 سے 20 سال کی مدت پر محیط اسٹرٹیجک پلان مرتب کرنے کی تجویز بھی پیش کی۔جمعرات کو وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے اپنے کویتی ہم منصب ڈاکٹر احمد نصیر ال محمد الصباح سے وڈیو لنک کے ذریعے رابطہ کیا اور کرونا عالمی وبائی صورتحال اور اس سے نبرد آزما ہونے کیلئے کی جانے والی کاوشوں سمیت باہمی دلچسپی کے متعدد امور پر تبادلہ خیال کیا، وزیر خارجہ نے اپنے کویتی ہم منصب کو رمضان الکریم کی مبارک باد دی، وزیر خارجہ نے اس وائرس کی روک تھام کیلئے، کویتی حکومت کی جانب سے کیے گئے بروقت اقدامات کو سراہتے ہوئے، پاکستان میں اس وبائی صورتحال سے نمٹنے کیلئے جاری کاوشوں سے اپنے کویتی ہم منصب کو آگاہ کیا، شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کرونا عالمی وبائی چیلنج اس صدی میں بنی نوع انسان کو پیش آنے والے بڑے چیلنجز میں سے ایک ہے، وزیر خارجہ نے، کرونا وبائی تناظر میں ترقی پذیر ممالک کی معیشتوں کو سہارا دینے کیلئے، وزیراعظم عمران خان کے "گلوبل ڈیٹ ریلیف" مطالبے کی تفصیلات سے، کویتی وزیر خارجہ کو آگاہ کیا، کویتی وزیر خارجہ نے کرونا وبا کے پیش نظر، ترقی پذیر ممالک کی معاشی بحالی کیلئے وزیراعظم عمران خان کے گلوبل ڈیٹ ریلیف تجویز کو سراہتے ہوئے سلطنت کویت کی طرف سے اس مطالبے کی حمایت کا یقین دلایا،کویتی وزیر خارجہ نے کہا کہ کویت، پاکستان کے شعبہ صحت کی بہتری کیلئے بھی ممکنہ مالی معاونت فراہم کرنے کیلئے پرعزم ہے، ہمیں فوڈ سیکورٹی اور صحت کے شعبہ جات میں پاکستان کی معاونت درکار ہے،انہوں نے پاکستان اور کویت کے مابین معاشی، دفاعی اور عسکری شعبوں میں تعاون کے فروغ کیلئے، 5 سے 20 سال کی مدت پر محیط اسٹرٹیجک پلان مرتب کرنے کی تجویز بھی پیش کی۔ وزیر خارجہ نے کویت کے وزیر خارجہ کو حالات معمول پر آنے کے بعد دورہ ء پاکستان کی دعوت دی جسے انہوں نے شکریہ کیساتھ قبول کیا۔

پاکستان کویت اتفاق

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ملک میں کورونا کا عروج مئی کے آخر یا جون کے شروع میں ہوگا،لاک ڈاؤن کے سبب کاروباری طبقہ، سفید پوش طبقہ پریشان ہے،ملک میں وینٹی لیٹرز پر مریضوں کی تعداد کم ہے، ہسپتالوں میں تیاری ہے ہمیں لوگوں کے مسائل بھی دیکھنے ہیں، اللہ نہ کرے اگر صورتحال خطرناک ہوتی ہے تو ہمیں بندوبست کرنا ہوگا، ہم نے کئی بار کہا اٹھارویں ترمیم کے تحت سندھ حکومت مکمل بااختیار ہے، ترمیم کو دس سال ہوگئے ہیں، ہمیں ان تجربات کا جائزہ لینا چاہئے، اٹھارویں ترمیم کو کوئی نہیں چھیڑ رہا، بہتری کی گنجائش ہے تو اچھی بات ہے، اس کو بلڈوز کرنے کا کوئی ارادہ نہیں،ایک طبقہ چاہتا ہے نیب کا ادارہ بالکل کمزور اور بے اختیار ہوجائے۔ ایک انٹرویومیں انہوں نے کہاکورونا وائرس کے باعث مسلسل لاک ڈاؤن رہتا ہے تو اس کے بھی نقصانات ہیں۔پی پی ایز، ٹیسٹنگ میں اضافہ کیا ہے، قرنطینہ سہولت کو بڑھا دیا ہے، ہم نے رضاکار فورس بھی تیار کرلی، معاشی مسائل بھی دیکھنے ہیں۔ ہمارے پاس دس لاکھ تک رضاکاروں نے خود کو رجسٹرڈ کیا ہے، ہمارے مخالفین کو خدشہ تھا ٹائیگر فورس سیاسی ہے جو بالکل غلط ہے، ضلعی سطح پر کمیٹیاں بنائی ہیں اور سرکاری افسران کو سربراہ رکھا ہے، ٹائیگر فورس سے متعلق کمیٹیوں میں سب جماعتوں کو شمولیت دی ہے، ہم دعوت دے رہے ہیں آئیں ہمارے ساتھ چلیں اور قومی فریضہ پورا کریں۔صوبہ سندھ جانے کیلئے وزیراعظم عمران خان ہروقت تیار ہیں، وہ ضرور سندھ جائیں گے اس میں کوئی قباحت نہیں، تاہم سندھ حکومت نے جو زبان استعمال کی اور رویہ اپنایا وہ دوستانہ نہیں۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ(ن) لیگ اور پی پی کی 10 سال حکومت رہی نیب قوانین پر غور کیوں نہیں کیا، نیب قوانین سے متعلق اپوزیشن آئے اور بات کرے، ایک طبقہ نیب کو اینٹی کرپشن جیسا ادارہ بنانا چاہتا ہے، بلاول اور شہباز شریف کے پاس ٹھوس تجاویز ہیں تو آئیں بات کریں، این آر او کی تلاش میں نہ جائیں ٹھوس بات کریں۔قبل ازیں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی زیر صدارت سعودی عرب میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کیساتھ ہونیوالے ویڈیو لنک اجلاس میں سعودی عرب میں متعین پاکستانی سفیر راجہ علی اعجاز نے بتایا کہ سعودی عرب میں کورونا وائرس کی وبا سے 150 پاکستانی متاثر جبکہ 30 افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔پاکستانی سفیر را جہ علی اعجاز نے وزیرخارجہ کو کورونا کے تناظر میں سعودی عرب میں پاکستانی کمیونٹی کی صورتحال پربریفنگ دی اور اور اس حوالے سے کیے گئے اقدامات سے آگاہ کیا۔اس موقع پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا سعودی عر ب کی جانب سے طبی سہولیات کی فراہمی اور دیگر ممالک کے شہریوں کو زبردستی واپس نہ بھجوانے کا فیصلہ خوش آئند ہے، ہم ان کے شکر گذار ہیں۔ انشاء اللہ ہم جلد وطن واپسی کے خواہشمند پاکستانیوں کو لانے میں کامیاب ہو جائیں گے۔ کسی کوبھی اندازہ نہیں یہ وبا ء کتنا عرصہ چلے گی،ان حالات میں پاکستان جیسا ملک مسلسل لاک ڈاؤن نہیں رکھ سکتا۔

شاہ محمود

مزید :

صفحہ اول -