مسلم لیگ (ق) پھر تحریک انصاف سے ناراض، قیادت کو دباؤ میں لانے کا الزام

  مسلم لیگ (ق) پھر تحریک انصاف سے ناراض، قیادت کو دباؤ میں لانے کا الزام

  

لاہور (جنرل رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک)نیب میں پرانی فائلیں کھلنے کی اطلاعات پر مسلم لیگ ق اور وفاقی حکومت میں فاصلے بڑھنے لگے،مسلم لیگ ق نے ہر بدلتی صورتحال پر پارٹی کے اندر مشاورت کا فیصلہ کرلیا۔ذرائع کے مطابق مسلم لیگ(ق)نے تشویش ظاہر کی کہ منصوبہ بندی کے تحت ان کی قیادت کو نشانہ بنایا جا رہا ہے، اتحادیوں کو دباؤ میں لانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ترجمان مسلم لیگ ق کے مطابق اثاثہ جات کیس 20 سال پرانا ہے، مشرف دور میں سب سے پہلی انکوائری میں سامنا کیا، 17 سال انکوائری چلنے کے بعد کیس 2017 میں بند کیا گیا، ملازمتیں دینے کا کیس 34 سال پرانا ہے، اس کیس کو بھی نیب کا پراسیکیوشن ونگ بند کرنے کی سفارش کرچکا ہے، قرضوں کی معافی کا کیس بھی بے بنیاد ہے، تفتیشی کیس بند کرنے کی سفارش کرچکے ہیں، ان حقائق کے تناظر میں نیب کا کیسز چلائے رکھنا سراسر بدنیتی ہے۔

ق لیگ/الزام

مزید :

صفحہ اول -