فلپائن کی مجموعی قومی پیداوار میں پہلی سہ ماہی کے دوران 0.2 فیصد کمی

  فلپائن کی مجموعی قومی پیداوار میں پہلی سہ ماہی کے دوران 0.2 فیصد کمی

  

منیلا (آن لائن)فلپائن کی مجموعی قومی پیداوار میں کورونا وائرس لاک ڈاؤن کے باعث پہلی سہ ماہی کے دوران 0.2 فیصد کمی ہوئی جو دوعشروں میں پہلا واقعہ ہے، تاہم حکام نے متنبہ کیا ہے کہ آئندہ مہینوں کے دوران زیادہ مشکل صورتحال کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔وزارت اقتصادی منصوبہ بندی کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق کورونا وائرس لاک ڈاؤن کے باعث ملکی اقتصادی شرح نمو بری طرح متاثر ہوئی ہے۔

،رواں سال جنوری سے مارچ کے عرصے میں مجموعی قومی پیداوار میں 2019  کے پہلے تین ماہ کے مقابلے میں 0.2 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی ہے جو 1998  کے بعد پہلا واقعہ ہے۔وزارت کے قائم مقام سیکرٹری کارل چوا کا کہنا تھا کہ پہلے جنوری میں سمندری طوفان تال کے باعث ملک میں کاروباری و فضائی سرگرمیاں معطل ہوئیں اس کے بعد کورونا وائرس ہلاکتوں کے باعث ہونے والے اسی انداز کے لاک ڈاؤن نے بھی ملکی معیشت کو بری طرح متاثر کیا ہے اور قوم کو اس کی بھاری قیمت چکانی پڑ رہی ہے۔انھوں نے کہا کہ دوسری سہ ماہی کے دوران ملک کو زیادہ مشکل حالات کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے جس سے ملکی معیشت مزید سکڑنے کا قوی امکان ہے، تاہم ان کا کہنا تھا کہ دوسری ششماہی کے دوران ملک میں اقتصادی سرگرمیوں کے بہتر ہونے کا امکان ہے۔۔#/s#

مزید :

کامرس -