محکمہ صحت کے آفس بوائے میں کرونا تصدیق‘ ملازمین میں بے چینی

  محکمہ صحت کے آفس بوائے میں کرونا تصدیق‘ ملازمین میں بے چینی

  

ملتان(نمائندہ خصوصی) ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی ملتان کے نائب قاصد کے بعد ایک اور آفس بوائے میں کورونا کی تصدیق،نچلے درجے کے ملازمین کے ساتھ افسران کا ناروا سلوک،رابطے میں رہنے والے ملازمین کو آئی سو لیٹ کر کے کورونا ٹیسٹ کروانے کی بجائے ڈیوٹیاں بڑھا دی گئیں،ملازمین پریشان،طبی حلقوں کی جانب سے معاملے کا نوٹس لینے کا (بقیہ نمبر11صفحہ6پر)

مطالبہ میں تفصیل کے مطابق ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی ملتان کے نائب قاصد دانش میں چند روز قبل کورونا کی تصدیق ہوئی جبکہ سی ای او ہیلتھ آفس کا ملازم بھی کورونا کے شبہ میں نشتر ہسپتال زیر علاج رہا اسی طرح گزشتہ روز ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے آفس بوائے امجد میں بھی کورونا کی تصدیق ہو گئی ہے جو اب نشتر ہسپتال کے آئی سو لیشن وارڈ میں زیر علاج ہے تاہم اس دوران سابقہ سی ای او کو کرپشن الزامات کی وجہ سے عہدہ سے ہٹا دیا گیا جبکہ اضافی چارج پر موجود نئے تعینات ہونے والے سی ای او ڈاکٹر سلیم لغاری نے دانش طیب اور امجد سے قریبی رابطے میں رہنے والے ملازمین کو آئی سو لیٹ کر کے تشخیصی ٹیسٹ کروانے کی بجائے انہیں کام جاری رکھنے کی ہدایات جاری کی ہیں جس پر تمام ملازمین شدید عدم تحفظ کا شکار ہو گئے ہیں ادھر بتایا جا رہا ہے ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکس جو پی پی ایز دوران ڈیوٹی استعمال کرتے ہیں انکو ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے دفتر کے عقبی حصہ میں پھینک دیا جاتا ہے جسے بعد ازاں سینٹری ورکرز کے ذریعے جلا کر تلف کیا جاتا ہے اس حوالے سے سینٹری ورکر بھی عدم تحفظ کا شکار ہیں جبکہ تمام معاملات پر ینگ ڈاکٹرز ریفارمز ایسوسی ایشن کے ڈاکٹر سعید چودھری،ڈاکٹر میاں عدنان و دیگر نے نوٹس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے ملازمین کے تشخیصی ٹیسٹ کروانے کا مطالبہ کیا ہے۔

تصدیق

مزید :

ملتان صفحہ آخر -