رمضان کے دوسرے عشرے میں بھی مہنگائی کا زوربرقرار

رمضان کے دوسرے عشرے میں بھی مہنگائی کا زوربرقرار

  

پشاور (سٹی رپورٹر)صوبائی دارالحکومت پشاور میں رمضان المبارک کے دوسرے عشرے میں بھی مہنگائی کی شرح میں کوئی کمی نظر نہیں آرہا ہے۔ تازہ سبزیوں سے لیکر پھل،مرغی کا گوشت سمیت روزمرہ استعمال کے آشیا کی قیمتیں بے لگام ہوچکی ہیں، مارکیٹ میں اچھی کوالٹی کی حامل بنڈی100سے 120میں فروخت ہورہی ہے، پیاز 70روپے، آلو80روپے جبکہ لیموں 400سے450روپے میں فروخت ہورہا ہے۔جبکہ اس دوران پھلوں کی قیمتیں بڑھنے سے روزہ داروں کے لئے پھل خریدنا بھی مشکل بن رہا ہے۔مارکیٹ میں تربوزفی کلو 80روپے جبکہ سیب 250روپے میں فروخت ہورہا ہے۔پچھلے ایک ہفتے کے دوران مرغی کی قیمت میں 60روپے اضافے کے ساتھ چکن فی کلو 181روپے تک پہنچ گیا ہے۔صارفین نے آشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں مسلسل اضافے کو انتظامیہ کی ناکامی قرار دیتے ہوئے کہا کہ شہر میں پرائس کنٹرول کے موثر نظام کی عدم موجودگی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے گرانفروش صارفین کو مہنگے داموں آشیا خریدنے پر مجبور کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ایک طرف کورونا وائرس کی وجہ سے نافذ لاک ڈاون سے روزانہ کی بنیاد پر کمانے والے اپنے روزگار سے محروم ہوچکے ہیں،تو دوسری طرف ناجائز منافع خوری کے عادی ماہ مقدس میں بھی اپنی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں۔صارفین نے ضلعی انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ صوبائی دارلحکومت میں پرائس کنٹرول کا موثر نظام رائج کر کے جزا وسزا کا سلسلہ شروع کیا جائے تاکہ قانون کی حکمرانی کا بول بالا ہو۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -