لاک ڈاؤن میں پولیس کے ناروا سلوک کا نوٹس لیا جائے، شکیل راجپوت

لاک ڈاؤن میں پولیس کے ناروا سلوک کا نوٹس لیا جائے، شکیل راجپوت

  

میرپورخاص(بیورورپورٹ)حق پرست کونسلر شکیل احمد راجپوت، عامر وحید، عاشق علی نیلگر، توفیق ملک، عمران قریشی اور دیگر نے اپنے مشترکا بیان میں پولیس کی جانب سے میرپورخاص شہر کے چھوٹے بڑے دکاندار اور ٹھیلے والوں کے ساتھ لاک ڈاؤن کی آڑ میں ناروا سلوک کی شدید مذمت کی اور وزیراعلیٰ سندھ اور آئی جی سندھ سے مطالبہ کیا کہ مقامی پولیس کو لگام دے کر رکھا جائے جو غریب دکانداروں اور ٹھیلے والوں پر روزانہ تشدد کر رہی ہے،انہو ں نے کہا کہ پولیس مبینہ طور پر معصوم شہریوں کو لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کی آڑ میں گرفتار کر کے کمائی کا دھندہ شروع کر دیا ہے ہزاروں روپے وصول کر کے گرفتار افراد کو چھوڑ دیا جاتا ہے،انہوں نے کہا شہر میں پولیس کی غنڈہ گردی سے قانون نام کی کوئی چیز نظر نہیں آتی اور عام شہریوں کے حق غضب کردیئے گئے،انہوں نے کہا کہ آج لاک ڈاؤن کی وجہ سے چھوٹے بڑے دکاندار اور ٹھیلے و الے غربت کیو جہ سے مانگنے پر مجبور ہوگئے ہیں جبکہ انہیں حکومت کی جانب سے سرکاری مراعات سے محروم رکھا گیا ہے،انہوں نے الزم لگایا کہ سادے کپڑے میں پولیس کے اہلکار ٹھیلے والوں اور دکانداروں سے بھتہ وصول کر رہے ہیں جبکہ دوسری جانب پولیس کی آڑ میں بڑے پیمانے پر گٹکا مین،پوڑی، سفینہ اور منشیات کا کام جاری ہے پولیس اپنی سرپرستی میں منشیات کے دھندے کروا رہی ہے اور آج بھی منشیات کے اڈوں سے خفیہ طور پر منشیات فروخت کی جا رہی ہے، انہوں نے خبردار کیا کہ اگر میرپورخاص شہر میں دکانداروں شہریوں اور ٹھیلے والوں کے ساتھ اس قسم کا ناروا سلوک جاری رہا تو خطرہ ہے کہ عوام لاک ڈاؤن توڑ کر روڈوں پر نکل آئے اور حکومت کی رٹ کو چیلنج کر دے،انہوں نے حکومت پر زور دیا ہے کہ فوری طور پر پولیس کی بھتہ خوری اور غریب دکانداروں پر ظلم کو فوری طور پر روکا جائے اور عوام کو رلیف دیتے ہوئے راشن کے تھیلے تقسیم کیئے جائیں اور غریب دکانداروں اور ٹھیلے والوں کو کاروبار کرنے کی اجازت دی جائے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -