کورونا وائرس کی وبا کے دوران پاکستان میں کتنے بچے پیداہوں گے؟

کورونا وائرس کی وبا کے دوران پاکستان میں کتنے بچے پیداہوں گے؟
کورونا وائرس کی وبا کے دوران پاکستان میں کتنے بچے پیداہوں گے؟

  

جنیوا(ڈیلی پاکستان آن لائن)اقوام متحدہ کے  ادارہ برائے اطفال (یونیسف) نے امکان ظاہر کیا ہے کہ کورونا وائرس کی وبا کے آغاز سے لےکر آئندہ نو ماہ تک  پاکستان میں پچاس لاکھ بچوں کی پیداہوں گے۔

بی بی سی کے مطابق عالمی ادارہ برائے اطفال کاکہنا ہے اس وبا کے دوران دنیا بھرمیں گیارہ کروڑ ساٹھ لاکھ کے قریب بچوں کی پیدائش متوقع ہے جن میں سے ایک چوتھائی یعنی دوکروڑ نوے لاکھ بچے جنوبی ایشیائی ملکوں میں پیدا ہوں گے۔

عالمی ادارے نے یہ اندازہ وبا کے آغاز سے بعد سے لے کر آئندہ 40 ہفتوں (نو ماہ) کی بنیاد پر لگایا گیا ہے۔

دنیا میں سب سے زیادہ بچے بھارت میں پیدا ہونے کاامکان ہے۔ رپورٹ کے مطابق انڈیا میں دوکروڑ بچے ہوں گے جبکہ جنوبی ایشیا میں  دوسرے نمبر پر سب سے زیادہ بچے پاکستان میں ہوں گے جہاں پچاس لاکھ بچوں کی پیدائش متوقع ہے۔

اسی طرح جنوبی ایشیا میں بنگلہ دیش 24لاکھ بچوں کے ساتھ تیسرے جبکہ افغانستان 10لاکھ بچوں کے ساتھ چوتھے نمبر پررہے گا۔

اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ عالمی سطح پر کورونا ایمرجنسی کے باعث صحت کی سہولیات انتہائی سخت دباؤ میں ہیں جس کے باعث زچہ اور بچہ کی صحت کے حوالے سے بڑے پیمانے پر خدشات موجود ہیں۔

ادارہ برائے اطفال کا مزید کہنا ہے کہ اس کا مطلب یہ ہو گا کہ جنوب ایشیائی ممالک میں نوزائیدہ بچوں اور ان کی ماؤں کو سخت زمینی حقائق کا سامنا کرنا پڑے گا جیسا کہ لاک ڈاؤن، کرفیو اور طبی اور دیگر سہولیات کی کمی اور دائیوں سمیت صحت کے ہنرمند کارکنان کی کمی۔

اقوام متحدہ نے جنوب ایشیائی ممالک کی حکومتوں کی اپیل کی ہے کہ وہ ان اعدادوشمار کو سامنے رکھتے ہوئے اپنے اپنے ممالک میں مناسب اقدامات کریں۔

مزید :

قومی -کورونا وائرس -