کورونا وائرس کے چینی لیبارٹری سے پھیلاوکےالزامات،جرمن خفیہ ایجنسی حقائق سامنے لے آئی

کورونا وائرس کے چینی لیبارٹری سے پھیلاوکےالزامات،جرمن خفیہ ایجنسی حقائق ...
کورونا وائرس کے چینی لیبارٹری سے پھیلاوکےالزامات،جرمن خفیہ ایجنسی حقائق سامنے لے آئی

  

برلن(ڈیلی پاکستان آن لائن) امریکہ کی جانب سے متعدد بار الزامات لگائے گئے ہیں کہ کورونا وائرس چین کی ووہان لیبارٹری سے پھیلا ہے، اس حوالے سے صدر ٹرمپ تو شواہد دیکھنے کا بھی دعویٰ کرچکے ہیں جبکہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو بھی مختلف دعوے کرتے دکھائی دیے ہیں تاہم اب جرمن خفیہ ایجنسی نے اس حوالے سے اپنی رپورٹ پیش کردی ہے جس میں امریکی دعووں کو مشکوک قراردیا گیاہے۔

برطانوی نیوزایجنسی رائٹرز کے مطابق جرمن خفیہ ایجنسی کا کہنا ہے کہ امریکا کورونا وائرس پر قابو پانے میں اپنی ناکامی کو چھپانے کیلئے ملبہ چین پر ڈالنے کی کوشش کررہا ہے۔

جرمنی کی بی این ڈی جاسوس ایجنسی جو کہ امریکی قیادت میں بنائے گئےخفیہ ایجنسیوں کے گروپ "فائیو آئیز" کی بھی رکن ہے کا کہنا ہے کہ خفیہ ایجنسیوں کے اس گروپ میں شامل کسی بھی جاسوس ادارے نے امریکی وزیر خارجہ کی جانب سے عائد کیے گئے الزامات کی حمایت نہیں کی ہے۔

اس گروپ میں امریکا، برطانیہ، کینیڈا، آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کی خفیہ ایجنسیاں شامل ہیں۔

جرمن وزیر دفاع کو پیش کی گئی اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چین پر الزامات دراصل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ناکامیوں کو چھپانے اور امریکی شہریوں کی توجہ دوسری جانب منتقل کرنے کی کوشش تھی۔

خیال رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور وزیر خارجہ مائیک پومپیو کورونا وائرس کے پھیلاوکی ذمہ داری چین پر عائد کرتے ہیں۔ ان کا خیال ہے کہ یہ وائرس دراصل چینی شہرووہان میں واقع ایک پی فور لیبارٹری سے پھیلا ۔

امریکا کایہ بھی کہنا ہے کہ چین نے بروقت اطلاع نہ دے کر اس وائرس کو دوسرے ملکوں تک پھیلنے کا موقع دیا ہے۔

چین ان تمام الزامات کی سختی سے تردید کرتاہے۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -