”پاکستان اور ویسٹ انڈیز کیخلاف سیریز کرا دو، ہم 9 ہفتے گھر بھی نہیں جائیں گے“ انگلش کرکٹرز نے حیران کن اعلان کر دیا

”پاکستان اور ویسٹ انڈیز کیخلاف سیریز کرا دو، ہم 9 ہفتے گھر بھی نہیں جائیں ...
”پاکستان اور ویسٹ انڈیز کیخلاف سیریز کرا دو، ہم 9 ہفتے گھر بھی نہیں جائیں گے“ انگلش کرکٹرز نے حیران کن اعلان کر دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) کرکٹ کے میدان دوبارہ آباد کرنے کیلئے انگلش کرکٹرز نے ملک میں ہی ’پردیسی‘ ہونے پررضامندی ظاہر کر دی ہے اور مارک ووڈ کا کہنا ہے کہ ویسٹ انڈیز اور پاکستان کیخلاف ہوم سیریز کیلئے 9ہفتے گھر نہ جانے کی پابندی بھی قبول ہو گی، انتظامات پر کسی کو اعتراض نہیں ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس کی وجہ سے پیدا ہونے والی صورتحال میں بہتری کی امید پر انگلش کرکٹ بورڈ ویسٹ انڈیز اور پاکستان سے 3، 3 ٹیسٹ میچز کی سیریز ری شیڈول کرنے کیئے کوشاں ہے اور پہلا ٹیسٹ 8 جولائی کو شروع کرانے کی پلاننگ کے ساتھ ممکنہ احتیاطی تدابیر پر بھی غور ہونے لگا،اب تک سامنے آنے والی تجاویز کے مطابق 25سے 30 کرکٹرز 23 جون کو کیمپ میں رپورٹ کرنے کے بعد گروپس میں پریکٹس کریں گے، وہ پاکستان کے خلاف سیریز مکمل ہونے تک 9 ہفتے گھروں کو واپس نہیں جائیں گے۔

ذرائع کے مطابق اس دوران روزانہ ٹمپریچر چیک کیا جائے گا، باقاعدگی سے کورونا وائرس کے ٹیسٹ بھی ہوتے رہیں گے۔ میدانوں میں واپسی کو ترسے انگلش کرکٹرز ملک میں رہتے ہوئے بھی پردیسی ہونے کو تیار ہیں۔ مارک ووڈ نے کہاکہ کھلاڑی طویل ٹورز کیلئے ملک سے باہر رہنے کے عادی ہیں، اب انگلینڈ میں موجود ہوتے ہوئے بھی گھروں سے دور رہنا پڑے تو کسی کو اعتراض نہیں ہونا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ ماحول اور اپنے اہل خانہ کو محفوظ رکھنے کیلئے یہ قدم اٹھانا ضروری ہے، کرکٹرز کو تنخواہیں مل رہی ہیں اور ان کی خواہش ہے کہ جلد سے جلد میدان میں اتریں،سب حفاظتی انتظامات کی پاسداری کریں گے، کھلاڑیوں کو یقین ہے کہ بورڈ اور حکومت تمام پہلوﺅں کا جائزہ لینے کے بعد سوچ سمجھ کر ہی کوئی فیصلہ کرے گی۔

مزید :

کھیل -