معروف پاکستانی سیاستدان جس نے ایکس (ٹوئٹر) کو پورن سائٹ قرار دیدیا

معروف پاکستانی سیاستدان جس نے ایکس (ٹوئٹر) کو پورن سائٹ قرار دیدیا
 معروف پاکستانی سیاستدان جس نے ایکس (ٹوئٹر) کو پورن سائٹ قرار دیدیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کوئٹہ (ویب ڈیسک) سابق نگران وزیر اطلاعات بلوچستان جان اچکزئی نے ٹوئٹر (ایکس) کو ’پورن سائٹ‘ قررار دیتے ہوئے اس کو مسلسل بند رکھنے کا مطالبہ کردیا۔جان اچکزئی نے ’ایکس‘ کو فحش ویب سائٹ قرار دینے کا بیان ایکس کے ذریعے ہی پوسٹ کیا۔

آج نیوز کے مطابق  جان اچکزئی نے لکھا کہ ’وی پی این سے (ایکس تک) رسائی بھی ختم کرنے کی ضرورت ہے، ٹوئٹر پورن سائٹ ہے، اس کا بند ہو جانا بہتر ہے‘۔انہوں نے مزید لکھا کہ ’اِس کو بند کر دو پاکستان میں سکون ہو جائے گا، شکر ہے بند ہونے جا رہی ہے، یہ تو حکومت سے تعاون کرے، پورن پر فائر وال لگائے، جعلی اکاؤنٹ بند کریں‘۔

 جان اچکزئی کے اس بیان پر سوشل میڈیا صارفین نے انہیں آڑے ہاتھوں لے لیا اور انتہائی سخت تبصرے کئے۔ اپنے ایک اور ٹوئٹ میں جان اچکزئی نے لکھا کہ ’ایکس پر پابندی کے بارے میں پوچھے جانے پر ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ سوشل میڈیا کو سیاسی اور دیگر عناصر بغیر ثبوت کے ”ریاستی اداروں پر الزام لگانے“ کے لیے استعمال کرتے ہیں۔ اس نے اپنی تشویش کا اظہار کیا لیکن واضح طور پر کسی پابندی کا اعتراف نہیں کیا۔ اس لیے پاکستان میں ٹویٹر پر پابندی نہیں ہے۔‘

 یادرہے کہ رواں برس عام انتخابات کے بعد 17 فروری سے پاکستان بھر میں سوشل میڈیا پلیٹ فارم ”ایکس“ کو بندش کا سامنا ہے، حکومت کی جانب سے بھی ایکس پر پابندی کی تصدیق کی جاچکی ہے۔