شہید کارکنوں کا قصاص ہر صورت لیا جائیگا، ڈاکٹر حسین محی الدین القادری

شہید کارکنوں کا قصاص ہر صورت لیا جائیگا، ڈاکٹر حسین محی الدین القادری

لاہور(سٹاف رپورٹر)خون دور کی بات کارکنوں کے پسینے کا بھی سودا نہیں ہو سکتا، شہید کارکنوں کا قصاص ہر صورت لیا جائیگا، سانحہ واہگہ بارڈر دہشت گردی کے ذمہ دار نااہل حکمران ہیں، جنہیں عوام کے جان مال کی کوئی پروا نہیں، حکمرانوں نے عوام سے جینے کا حق بھی چھین لیا ہے، ظالموں کو آئین و قانون کے مطابق سزا دلوا کر دم لیں گے، ان خیالات کا اظہار پاکستان عوامی تحریک کی فیڈرل کونسل کے صدر ڈاکٹر حسین محی الدین القادری نے شہدائے ماڈل ٹاﺅن اوار سانحہ واہگہ بارڈر دہشتگردی کے دوران شہید ہونے والے افراد کے اہلخانہ سے گفتگو کے دوران کیا، وہ فرداً فرداً شہداءکے اہلخانہ سے ملے ان کی خیریت دریافت کی ان کے جذبہ اور ہمت کی داد دی اور کہا کہ انقلاب کے عظیم مقصد کیلئے بہنے والا یہ خون رائیگاں نہیں جائے گا، شہداءکی قربانیاں قوم کو ان کے آئینی حقوق دلائیں گی اور ظلم کے نظام کا خاتمہ ہو گا، اس موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ قائد انقلاب ڈاکٹر طاہر القادری عوام کے حقوق اور پاکستان کے وقار کی جنگ لڑرہے ہیں، ان کی جدوجہد سے عوام کو شعور ملا، عوام کے تعاون سے جاری رہنے والی جدوجہد جلد انقلاب کی منزل تک پہنچے گی، انہوں نے کہا کہ خیبر تا کراچی ملک جل رہا ہے، دہشتگردی کے خاتمہ کیلئے افواج پاکستان قابل فخر قربانیاں دے رہی ہیں مگر صوبائی حکومت کی نااہلی کی وجہ سے عوام امن کے ثمر سے محروم ہیں، انہوں نے کہا کہ 70 دن کے تاریخی دھرنے نے پاکستان کی سیاست کا نقشہ بدل دیا، سانحہ ماڈل ٹاﺅن کی FIR کے بعد اب تک جے آئی ٹی کا نہ بننا اور تفتیش کا آغاز نہ ہونا لاقانونیت کی انتہا ہے مگر شہداءکا خون رنگ لائے گا اور قاتل اپنے انجام کو پہنچیں گے، انہوں نے سانحہ واہگہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے حکمرانوں کی بدترین ناکامی قرار دیا، انہوں نے کہا کہ قوم حکومت سے سوال کرتی ہے کہ آئے روز درجنوں افراد کا دہشت گردی کی بھنٹ چڑھ جانے کا ذمہ دار کون ہے؟ انہوں نے کہا کہ خاندانی بادشاہت کا نظام تمام برائیوں کی جڑ ہے، پاکستان عوامی تحریک ووٹ کی طاقت سے اس نظام کو بدلے گی۔

مزید : علاقائی