نیلم جہلم سرچارج کے خلاف کیس کی سماعت 18دسمبر تک ملتوی

نیلم جہلم سرچارج کے خلاف کیس کی سماعت 18دسمبر تک ملتوی

لاہور (نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے نیلم جہلم پاور منصوبے کی آڑ میں بجلی کے بلوں پر عائد سرچارج کے خلاف دائر درخواست میں نیلم جہلم پاور پراجیکٹ کمپنی کو فریق بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے مقدمہ کی مزید سماعت 18دسمبر تک ملتوی کر دی۔ جسٹس شجاعت علی خان نے کیس کی سماعت کی۔عدالتی سماعت کے موقع پر درخواست گزاروں کے وکلاءنے موقف اختیار کیا کہ حکومت نے نیلم جہلم پراجیکٹ ختم کر دیا ہے مگر اسکے باوجود بجلی کے بلوں پر غیر قانونی طور پرمنصوبے کے نام پر ٹیکس عائد کر کے اربوں روپیہ اکٹھا کیا جا رہا ہے۔انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ منصوبے کے نام پر عائد ٹیکس کے نفاذ کو کالعدم قرار دیا جائے۔نیلم جہلم پراجیکٹ کمپنی کے ڈائریکٹر فنانس نے عدالت کو آگاہ کیا کہ درخواست گزار نے کمپنی کو فریق ہی نہیں بنایا جس کی بناءپر تفصیلات سے آگاہ نہیں کیا جا سکتا۔جس پر عدالت نے درخواست گزار کو نیلم جہلم پاور پراجیکٹ کمپنی کو فریق بنانے کی ہدائت کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت 18دسمبر تک ملتوی کر دی۔

مزید : علاقائی